Published From Aurangabad & Buldhana

کورونا کی تیسری لہر کا خدشہ! 10 فیصد سے زائد ’پازیٹوٹی ریٹ‘ والے اضلاع میں سخت پابندیوں کی ہدایت

نئی دہلی: ملک میں کورونا کی دوسری لہر کی تباہ کاریاں ابھی ختم بھی نہیں ہوئی ہیں کہ تیسری لہر خطرہ منڈلانے لگا ہے، یہی وجہ ہے کہ حکومت متحرک ہو گئی ہے اور ضروری اقدام اٹھا رہی ہے۔ اسی ضمن میں مرکزی حکومت نے ریاستی حکومتوں کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ جن اضلاع میں کورونا وائرس کے انفیکشن کا پازیٹیوٹی ریٹ (کورونا مثبت پائے جانے کی شرح) 10 فیصد سے زیادہ ہے، ان اضلاع میں سخت پابندیاں عائد کی جائیں۔

مرکزی حکومت نے ہفتہ کے روز کورونا کی ممکنہ تیسری لہر کو روکنے کے لئے ریاستی حکومتوں کے ساتھ ایک جائزہ اجلاس طلب کیا۔ اجلاس کے دوران مرکزی وزیر صحت نے 10 فیصد پازیٹوٹی ریٹ والے اضلاد میں سخت پابندیاں عائد کرنے کی ہدایت جاری کرنے کے علاوہ ریاستوں کو یہ ہدایت بھی دی کہ ان اضلاع میں لوگوں کی بڑی تعداد کو ایک ساتھ جمع ہونے سے روکنے کے لئے مؤثر اقدامات اٹھائے جائیں۔

مرکزی حکومت کے اجلاس میں ان 10 ریاستوں نے شرکت کی جہاں کورونا کے نئے معاملوں میں تیزی نظر آ رہی ہے۔ مرکزی سیکریٹری برائے صحت راجیش بھوشن نے کہا کہ تمام اضلاع نے حال کے ہفتوں میں 10 فیصد سے زیادہ پازیٹوٹی ریٹ کی اطلاع دی ہے، ان ضلاع میں سخت پابندیوں کا اطلاق ناگزیر ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا کے انفیکشن کی روک تھام کے لئے لوگوں کی نقل و حرکت، مجمع لگانے اور بڑی تعداد میں ایک دوسرے کے رابطہ میں آنے پر قدغن لگائی جانی چاہیئے۔ انہوں نے کہا، ’’اس موقع پر کسی بھی طرح کی نرمی ان اضلاع کی صورت حال بگاڑ سکتی ہے۔‘‘ جن 10 ریاستوں میں کورونا وائرس کے معاملے بڑھ رہے ہیں وہ کیرالہ، مہاراشٹر، کرناٹک، تمل ناڈو، اوڈیشہ، آسام، میزورم، میگھالیہ، آندھرا پردیش اور منی پور ہیں۔ مرکزی حکومت نے انہی ریاستوں کے ساتھ جائزہ اجلاس طلب کیا تھا۔

قومی آواز

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!