Published From Aurangabad & Buldhana

ٹوکیو اولمپکس : مکہ باز لولینا نے تاریخ رقم کی، بھارت کے لئے ایک اور تمغہ یقینی بنایا

ٹوکیو : بھارتی خاتون مکہ باز لولینا بورگوہین نے ٹوکیو اولمپکس 2020 کے آج 8ویں دن تاریخ رقم کر دی ہے۔ وہ مکہ بازی مقابلوں کے سیمی فائنل میں پہنچ گئی ہیں اور اسی کے ساتھ ہندوستان کا ایک اور تمغہ یقینی ہو گیا ہے۔ لولینا نے خواتین کے 69 کلوگرام کے زمرے کے کوارٹر فائنل میں چینی تائپے کی مکہ باز نین چِن چین کو 4-1 سے شکست دی۔

لولینا بورگوہین کا تمغہ اولپکس کے باکسنگ مقابلوں کی تاریخ میں ہندوستان کا تیسرا میڈل ہوگا۔ اس سے قبل بیجنگ اولمپکس 2008 میں وجندر سنگھ اور لندن اولپکس 2012 میں ایم سی میری کام نے کانسی کے تمغے حاصل کئے تھے۔

کون ہیں لولینا بورگوہین؟
لولینا بورگوہین کی عمر 24 سال ہے اور ان کا تعلق آسام کے ایک چھوٹے سے گاؤں سے ہے۔ ان کے گاؤں کا نام برومکھیا ہے جوکہ گولاگھاٹ ضلع میں واقع ہے۔ دو مرتبہ عالمی چیمپین شپ میں تمغہ حاصل کر چکیں لولینا آسام کی پہلی باکسر ہیں جنہوں نے اولمپکس کے لئے کوالیفائی کیا ہے۔ 1.77 میٹر قد کی لولینا ٹوکیو اولمپکس کے 69 کلوگرام زمرے میں حصہ لے رہی ہیں۔

ٹوکیو اولپکس میں آج تیراندازی میں بھارت کو جیت ملی تو نشانہ بازی میں پھر سے ہار کا سامنا کرنا پڑال تیر انداز دیپیکا کماری نے پری کوارٹر فائل کا مقابلہ جیت کر آخری 8 کھلاڑیوں میں مقام حاصل کر لیا۔ جبکہ نشانہ باز منو بھاکر نے ایک بار پھر مایوس کیا۔ وہ 25 میٹر ایئر پسٹل کے فائنل میں مقام نہیں بنا پائی۔ منو بھاکر کو اب ٹوکیو اولمپکس سے خالی ہاتھ واپس لوٹنا ہوگا۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!