Published From Aurangabad & Buldhana

دوسری لہر میں کہرام مچانے والے وائرس نے بدلی شکل، ماہرین نے کہا خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں

ماہرین کا ماننا ہے کہ کورونا وائرس اپنی شکل مستقل بدل رہا ہے اور اب اس وائرس کی نئی شکل یا نئے ویرئنٹ ملنے کی بات کہی جا رہی ہے۔نئے ویرئنٹ کو ’ڈیلٹا پلس‘ یا’ اوائی 1‘کا نام دیا گیا ہے اور یہ کورونا کے ڈیلٹا ویرئنٹ سےبنا ہے جس سے اس سال بہت زیادہ بیماری پھیلی تھی جس نے ہندوستان سمیت کئی ممالک میں کہرام مچا دیا تھا۔

واضح رہےسائنس داں اس نئے ویرئنٹ کو لےکر زیادہ ڈرےہوئے نہیں ہیں اور ان کا ماننا ہے کہ ابھی اسے لے کر کوئی فکر کی بات نہیں ہے کیونکہ ملک میں ابھی اس کے بہت کم معاملہ ہیں۔ سی ایس آئی آ ر اور آئی جی آئی بی کے ڈاریکٹر اگروال نے کہا ہے کہ ابھی اس وائرس کو لےکر ہندوستان میں فکر کی کوئی بات نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ابھی اس کی جانچ کی جائے گی کہ یہ نیا ویرئنٹ قووت مدافعت کو شکست دے کر ان لوگوں کے جسموں میں داخل ہو سکتا ہے یا نہیں جن کو ٹیکہ لگ چکا ہے ۔

واضح رہے کورونا کی دوسری لہر نے سب سے زیادہ کہرام ہندوستان میں مچایا ہے جس کی وجہ سےہندوستان میں سب سے زیادہ لوگ متاثر ہو ئے اور اس وبا سے سب سے زیادہ اموات ہوئیں۔اب کہا یہ جا رہا ہے کہ دوسری لہر تو ختم ہوتی نظر آ رہی ہے لیکن جلد ہی تیسری لہر بھی آئے گی۔

قومی آواز

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!