Published From Aurangabad & Buldhana

حکومت گونگی تو تھی ہی، اب شاید اندھی-بہری بھی ہے : راہل گاندھی

نئی دہلی : کانگریس رکن پارلیمنٹ اور سابق صدر راہل گاندھی نے آشا کارکنان کے مسائل کو لے کر مرکزی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ انھوں نے اپنے ایک ٹوئٹ میں لکھا ہے کہ ”آشا کارکنان ملک بھر میں گھر گھر تک ہیلتھ سیکورٹی پہنچاتی ہیں۔ وہ سچ معنوں میں ہیلتھ واریرس ہیں لیکن آج خود اپنے حق کے لیے ہڑتال کرنے پر مجبور ہیں۔“ ساتھ ہی راہل گاندھی نے یہ بھی لکھا ہے کہ ”حکومت گونگی تو تھی ہی، اب شاید اندھی-بہری بھی ہے۔“


اپنے ٹوئٹ کے ساتھ راہل گاندھی نے ‘دی کوئنٹ’ (ہندی) کی ایک خبر کا لنک بھی شیئر کیا ہے جس کا عنوان ہے ‘کورونا واریرس کا درد، ملک بھر میں 6 لاکھ آشا ورکرس ہڑتال پر’۔ اس خبر میں لکھا گیا ہے کہ کورونا وبا میں جب ہر طرف لاک ڈاؤن تھا، لوگ گھروں میں تھے تب کچھ گمنام واریرس (جنگجو) گلی، محلے سے لے کر گاؤں-شہر میں دن کے دھوپ میں کورونا انفیکشن کو ٹریک کر رہے تھے۔ یہ واریرس تھے آشا ورکرس۔ لیکن اب تقریباً 6 لاکھ آشا ورکر اپنے کئی مطالبات کو لے کر ہڑتال پر جا رہے ہیں۔ اپنے مطالبات کی طرف دھیان دلانے کے لیے ملک بھر کی آشا ورکر 7 اگست سے دو دن کے ہڑتال پر ہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!