Published From Aurangabad & Buldhana

جوکووچ چھٹے مرتبہ بنے ومبلڈن چیمپئن، فیڈرر اور نڈال کے خطابوں کی کر لی برابری

لندن : دنیا کے نمبر ایک کھلاڑی سربیا کے نواک جوکووچ نے اٹلی کے ماتیو بیریٹینی کو اتوار کو چار سیٹوں میں شکست دے کر چھٹی مرتبہ سال کے تیسرے گرینڈ سلیم ومبلڈن ٹینس چیمپین شپ خطاب جیت لیا اور اس کے ساتھ ہی انہوں ںے سوئٹزرلینڈ کے راجر فیڈرر اور اسپین کے رافیل نڈال کے 20 گرینڈ سلیم خطابوں کے عالمی ریکارڈ کی برابری کر لی۔

ٹاپ سیڈ اور یہاں پانچ بار چیمپیئن رہ چکے جوکووچ نے ساتویں سیڈ بیریٹینی کو تین گھنٹے اور 24 منٹ تک جاری رہنے والے مقابلے میں 6-7، 6-4، 6-4، 6-3 سے شکست دے کر اپنا 20 واں گرینڈ سلیم خطاب جیت لیا۔ اس آسٹریلیائی اوپن، فرنچ اوپن کے بعد ومبلڈن خطاب جیت لیا۔ انہوں نے خطابی ہٹرک بھی مکمل کی۔ جوکووچ نے اس سے قبل 2018 اور 2019 میں بھی خطاب جیتا تھا۔ سنہ 2020 میں کورونا کی وجہ سے اس ٹورنامنٹ کا انعقاد نہیں ہوا تھا۔

جوکووچ سال میں مسلسل تیسرا گرینڈ سلیم جیتے کے بعد اب اگست کے اواخر میں منعقد ہونے والے سال کے چوتھے اور آخری گرینڈ سلیم یو ایس اوپن کو جیت کر سال میں کیریئر گرینڈ سلیم مکمل کرنے کی کوشیش کریں گے۔ 34 سالہ جوکووچ ایک سیزن میں چار گرینڈ سلیم جیتنے والے ڈان بج (938) اور روڈ لیور (1962 اور 1969) کے بعد تیسرے کھلاڑی بننے کی کوشش کریں گے۔

دوسری طرف بیریٹینی 1976 کے فرانسیسی اوپن میں ایڈریانو پینیٹا کے بعد گرینڈ سلیم فائنل کھیلنے والے پہلا اطالوی کھلاڑی بنے تھے۔ ان کاگراس کورٹ پر 11 میچوں کی جیت کا سلسلہ جوکووچ کے خلاف 48 غلطیاں کرنے کے بعد تھم گیا تھا۔ دلچسپ بات یہ رہی کہ جوکووچ نے ٹورنا منٹ میں اپنا پہلا میچ پہلا سیٹ ہارنے کے بعد جیتا تھا اور پھر فائنل تک کوئی سیٹ نہیں گنوایا۔ لیکن فائنل میں پہلا سیٹ ٹائی بریک میں ہارنے کے بعد انہوں نے شاندار واپسی کی اور اگلے تین سیٹ جیت کر چھٹی بار ومبلڈن چیمپیئن بن گئے۔

یو این آئی

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!