Published From Aurangabad & Buldhana

جنوبی افریقہ کے خلاف بھارت کی سب سے بڑی جیت, سیریز 2-2 سے برابر

اویس خان کی شاندار گیندبازی کی مدد سے بھارت نے تیسرے ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقہ کے خلاف 82 رن کی شاندار جیت درج کرائی۔ یہ رنوں کے لحاظ سے جنوبی افریقہ پر بھارت کی سب سے بڑی جیت ہے۔ واضح رہے 170 رنوں کے ہدف کے تعاقب میں جنوبی افریقہ کی اننگز کبھی بھی فارم میں نظر نہیں آئی۔

تیسرے اوور میں کپتان ٹیمبا باوما کے ریٹائر ہرٹ ہونے کے بعد ٹیم وقفے وقفے سے وکٹ گنواتی رہی۔ پروٹیازکے لئے راسی وین ڈیر ڈوسن نے سب سے زیادہ 20 رن بنائے۔ اوپنر کوئنٹن ڈی کاک نے 14 اور مارکو جانسن نے 12 رن بنائے۔ ان کے علاوہ کوئی بھی افریقی بلے باز 10 رن بھی نہ بنا سکا اور پوری ٹیم 87 رن کے مختصر اسکور پر آؤٹ ہو گئی۔

بھارت کی طرف سے اویس خان نے چار اووروں میں 18 رن دے کر چار وکٹ حاصل کئے جبکہ یوزی چہل نے چار اووروں میں 21 رن دے کر دو وکٹ حاصل کئے۔ ہرشل پٹیل اور اکشر پٹیل نے ایک ایک وکٹ حاصل کیا۔

بھارت کے 169 رنوں کے جواب میں جنوبی افریقہ کی شروعات اچھی نہ رہی۔ اننگز کے تیسرے اوور میں بھونیشور کمار کی گیند اوپنر اور کپتان ٹیمبا باوما کے کندھے پر لگی جس کے بعد وہ چوتھے اوور میں ریٹائر ہرٹ ہو کر میدان سے باہر چلے گئے۔ پروٹیاز کی مشکلات میں اس وقت اضافہ ہوا جب ہرشل پٹیل نے پانچویں اوور میں اوپنر کوئنٹن ڈی کاک کو رن آؤٹ کیا۔ 13 گیندوں پر دو چوکوں کی مدد سے 14 رن بنانے والے ڈی کاک کے آؤٹ ہونے کے بعد افریقہ کی 24 رنوں پر دو وکٹ گر گئے۔

اس کے بعد افریقہ کے وکٹ گرنے کا سلسلہ شروع ہوگیا۔ ٹیم کے سات بلے باز 10 رن سے کم کے ذاتی اسکور پر آؤٹ ہوئے جس میں دو بلے باز صفر پر بھی پویلین لوٹے۔ جنوبی افریقہ نے 14 رن کے اندر اپنے آخری پانچ وکٹ گنوا دیئے۔

دوسری جانب ہندوستانی گیند باز میچ پر مکمل طور پر حاوی رہے۔ ہاردک پانڈیا ( ایک اوور، 12 رن) کے علاوہ تمام گیند بازوں کی اکونومی چھ رن فی اوور سے نیچے رہی۔ اویس خان نے چار اوور میں 18 رن دے کر چار وکٹ لے کر ہندوستانی گیند بازوں کی قیادت کی۔ یوزی چہل نے چار اوور میں 21 رن دے کر دو وکٹ حاصل کئے جبکہ اکشر پٹیل نے 3.5 اوور میں 19 رن دے کر ایک وکٹ حاصل کیا۔ ہرشل پٹیل نے اپنے دو اووروں میں محض تین رن دے کر ڈیوڈ ملر کا قیمتی وکٹ حاصل کیا۔ بھونیشور کمار نے ہمیشہ کی طرح کفایتی بالنگ کی، دو اووروں میں آٹھ رن دیے، حالانکہ انہیں کوئی وکٹ نہیں ملا۔

اس سے قبل جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر ہندوستان کو پہلے بلے بازی کی دعوت دی اور سیریز کا اپنا پہلا میچ کھیل رہے لونگی نگیڈی نے سلامی بلے باز رتوراج گائیکواڑ (5) کو دوسرے ہی اوور میں آؤٹ کردیا۔ مارکو جانسن نے تیسرے اوور میں شریاس ائیر (4) کو آؤٹ کیا اور بھارت نے 24 رنوں پر ہی دو وکٹ گنوا دیئے۔

وکٹ جلدی گرنے کے سبب بھارت کی شروعات سست رہی اور ٹیم پاور پلے میں صرف 40 رن ہی بنا سکی۔ پاور پلے ختم ہوتے ہی اوپنر ایشان کشن بھی 25 گیندوں پر 27 رن بنانے کے بعد آؤٹ ہوگئے۔ اپنی اننگ میں ایشان نے تین چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

کپتان رشبھ پنت (17) اور نائب کپتان ہاردک پانڈیا (46) کے درمیان 41 رنوں کی شراکت ہوئی، لیکن پنت اننگ کی رفتار بڑھانے کی کوشش میں اپنا وکٹ گنوا بیٹھے۔ پنت نے 17 رن بنانے کے لئے 21 گیندیں لیں اور صرف دو چوکے لگائے۔

تیرہ اوورز کے اختتام پر بھارت صرف 81 رنز پر چار وکٹیں گنوانے کے بعد مشکل میں تھا لیکن کارتک نے اپنی دھماکہ خیز بلے بازی سے ٹیم کو باعزت اسکور تک پہنچا دیا۔ کارتک نے صرف 27 گیندوں پر نو چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 55 رنز بنائے۔ پانڈیا نے کارتک کا ساتھ دیتے ہوئے 31 گیندوں میں 46 رنز بنائے۔ اپنی ذمہ دارانہ اننگ میں پانڈیا نے تین چھکے اور تین چوکے لگائے۔

بھارت نے آخری پانچ اووروں میں 73 رن جوڑے اور چھ وکٹوں کے نقصان پر 169 رنز بنائے۔ جنوبی افریقہ کی جانب سے نگیڈی نے تین اوورز میں 20 رنز کے عوض دو وکٹیں حاصل کیں جب کہ مارکو جانسن، ڈوین پریٹوریس، اینرک نورتجے اور کیشو مہاراج کے نام ایک ایک وکٹ رہا۔

82 رن کی اس زبردست جیت کے ساتھ ہی ہندوستان نے سیریز 2-2 سے برابر کر لی۔ سیریز کا پانچواں میچ بنگلورو میں ہوگا جس میں فاتح ٹیم سیریز میں فاتح ہو گی۔

یو این آئی

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!