Published From Aurangabad & Buldhana

بھارت کے کھلاڑیوں کے اہل خانہ کو انگلینڈ کے دورے پر ساتھ جانے کی ملی اجازت

ممبئی : برطانیہ حکومت نے انگلینڈ کے دورے پر جانے والے بھارت کے مرد و خواتین ٹیم کے کھلاڑیوں، کوچنگ اور معاون عملے کے خاندانوں کو اپنے اہل خانہ کے ساتھ دورے پر جانے کی منظوری دے دی ہے۔ مردوں کی ٹیم تقریباً چار ماہ تک ٹور پر ہوگی۔ اس دوران انگلینڈ کے خلاف پانچ میچوں کی ٹیسٹ سیریز سے قبل وہ نیوزی لینڈ کے خلاف ورلڈ ٹیسٹ چیمپیئن شپ کا فائنل کھیلے گی، جبکہ خواتین ٹیم کو ایک ٹیسٹ، اس کے بعد تین ون ڈے اور تین ٹی 20 میچ کھیلنے ہیں۔

دونوں ٹیموں کے ممبران کے اہل خانہ اسی چارٹر پرواز سے انگلینڈ روانہ ہوں گے، جس میں مرد وخواتین ٹیم کے ممبران ہوں گے۔ پرواز تین جون کو لندن پہنچے گی۔ یہاں سے دونوں ٹیمیں ساوتھمپٹن جائیں گی، جہاں ان کی لازمی قرنطینہ مدت شروع ہوگی، حالانکہ قرنطینہ کی مدت کی تصدیق کی جانی باقی ہے۔ اطلاع کے مطابق بھارت کی خاتون ٹیم اس کے بعد برسٹل جائے گی، جہاں اس کا انگلینڈ کے خلاف ایک ٹیسٹ میچ ہوگا۔ وہیں مرد ٹیم کے بھی ساوتھمپٹن میں ایجس باؤل میں کنٹرول طریقے سے کوارنٹائن کے بعد پریکٹس شروع کرنے کی امید ہے۔ فی الحال دونوں ٹیمیں ممبئی میں ایک ہی ہوٹل میں کوارنٹائن ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ آئی سی سی نے 29 مئی کو اعلان کیا تھا کہ حکومت برطانیہ کی جانب سے ڈبلیو ٹی سی فائنل کو اسٹینڈرڈ کورونا پروٹوکال سے چھوٹ دے دی گئی ہے۔ بشرطیکہ ٹیمیں تمام رہنما خطوط کی پیروی کریں۔ بھارت کے مرد اور خاتون ٹیم کے لئے رعایت اس لئے اہم ہے کیونکہ برطانیہ حکومت نے بھارت کو ان ممالک کی ریڈ لسٹ میں ڈال دیا تھا، جہاں سے اپریل سے ہی تمام طرح کے سفر پر پابندی ہے۔

یو این آئی

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!