Published From Aurangabad & Buldhana

بارڈر-گاوسکر ٹرافی : ہندوستان کو 43 برسوں میں سڈنی میں پہلی جیت کا انتظار

سڈنی : ہندوستان اور آسٹریلیا کے مابین بارڈر-گاوسکر ٹرافی کا تیسرا ٹیسٹ سڈنی میں 7 جنوری سے ہو رہا ہے اور سڈنی گراؤنڈ میں ہندوستان کو گزشتہ 43 سالوں میں اپنی پہلی جیت کا انتظار ہے۔ ہندوستان اور آسٹریلیا کی ٹیمیں چار میچوں کی سیریز میں 1-1 کی برابری پر ہیں اور دونوں ٹیمیں سڈنی کے مقابلے میں سبقت حاصل کرنے کے ارادے سے اتریں گی۔ ہندوستان نے جنوری 1978 میں آسٹریلیا کو صرف ایک بار اس گراؤنڈ پر شکست دی تھی جب بشن سنگھ بیدی کی سربراہی میں ہندوستانی ٹیم نے باب سمپسن کی زیرقیادت آسٹریلیائی ٹیم کو اننگز اور دو رنز سے شکست دی تھی۔ تب سے ہندوستان اس گراؤنڈ پر کوئی میچ نہیں جیت سکا ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ جب 1978 میں ہندوستان نے کامیابی حاصل کی تھی تو سڈنی ٹیسٹ 7 جنوری کو شروع ہوا تھا اور اس بار بھی سیریز کا سڈنی ٹیسٹ 7 جنوری سے شروع ہو رہا ہے۔ اس گراؤنڈ میں دونوں ٹیموں کی تاریخ میں ان دو ٹیسٹ میچوں کے علاوہ دیگر کوئی مقابلہ 7 جنوری سے شروع نہیں ہوا ہے۔ سڈنی میں ٹیسٹ کرکٹ کا آغاز 1882 میں آسٹریلیا اور انگلینڈ کے مابین ہوا تھا۔ ہندوستان نے 1947 میں آزادی حاصل کرنے کے بعد دسمبر میں سڈنی میں اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلا تھا۔ جو کہ میچ ڈرا رہا تھا۔

اس کے بعد ہندوستان نے دوسرا میچ جنوری 1968 میں سڈنی میں کھیلا تھا، جسے آسٹریلیائی نے 144 رنز سے جیتا۔ 10 سال بعد، 1978 میں، ہندوستان نے آسٹریلیا کو سڈنی میں کھیلے گئے میچ میں اننگز اور دو رنز سے شکست دی۔ جنوری 1981 میں آسٹریلیا نے ہندوستان کو اننگز اور چار رنز سے شکست دی۔ جنوری 1986 میں دونوں ٹیموں کے مابین میچ ڈرا ہوا تھا۔ جنوری 1992 کا مقابلہ بھی ڈرا پر ختم ہوا۔ جنوری 2000 کے ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا نے ہندوستان کو اننگز اور 141 رنز سے شکست دی تھی۔

جنوری 2004 میں کھیلا جانے والا میچ ڈرا پر ختم ہوا۔ لیکن جنوری 2008 میں آسٹریلیا نے 122 رنز سے مقابلہ جیتا۔ جنوری 2012 میں آسٹریلیا نے ہندوستان کو اننگز اور 68 رنز سے شکست دی۔ جنوری 2015 کا میچ ڈرا پر ختم ہوا۔ 19-2018 کے گزشتہ آسٹریلیائی دورے میں ہندوستان کے پاس جیتنے کا بہترین موقع تھا لیکن خراب روشنی اور آخری دن بارش نے ہندوستان کے ہاتھ سے یہ موقع چھین لیا۔ ہندوستان نے اپنی پہلی اننگز چیتشور پجارا کے 193 اور رشبھ پانت کے ناٹ آوٹ 159 رنز کی بدولت سات وکٹوں پر 622 رنز بناکر ڈکلیئر کی۔

آسٹریلیائی ٹیم کی پہلی اننگز 300 رنز پر سمٹ گئی۔ آسٹریلیا نے فالوآن کے بعد چوتھے روز دوسری اننگز میں بغیر کوئی وکٹ کھوئے چھ رن بنالئے تھے، لیکن سیشن کا کھیل خراب روشنی کی وجہ سے ممکن نہیں ہوسکا۔ پانچویں دن کا کھیل بارش کے نذر ہوگیا اور میچ ڈرا پر ختم ہوا۔ یہ سیریز کا چوتھا میچ تھا اور ہندوستان نے سیریز دو۔ایک سے جیت لی۔ پوجارا مین آف دی میچ کے ساتھ ساتھ مین آف دی سیریز بھی بنے۔

یو این آئی

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!