Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد میں نئی ادبی انجمن ” اورنگ ادب “ کا قیام

تاسیسی اجلاس و طرحی مشاعرہ منعقد

ولی سراج کی سر زمین دبستان اورنگ آباد میں پھر ایک بار اردو ادب کا طوطی بولنے لگا ہے۔ اور ادب کے اکابر و مشاہیر کی سر پرستی میں یہاں تازہ ادبی توانائی کے ساتھ چند جیالوں نے اٹھ کر اردو کے فروغ اور نظم و نثر کے سبزہ زار بکھیر دینے کے عزم کے ساتھ بزم ” اورنگ ادب “ کی داغ بیل ڈالی ہے۔ اس بزم کا تاسیسی اجلاس ۱۱ ستمبر بروز اتورا تاریخی شاہی مسجد سے قریب بیت الیتیم کے عالمگیر ہال میں منعقد ہوا ۔ اس موقع پر ایک نہایت ہی شاندار طرحی مشاعرے کا اہتمام بھی کیا گیا ۔ افتتاحی اجلاس کی صدارت معروف علمی و ادبی شخصیت اور شاعر و نقاد ایڈوکیٹ اسلم مرزا نے فرمائی جبکہ اس بزم کا اجراءہر دلعزیز معتبر و معروف فکشن نگار نورالحسنین کے ہاتھوں بزم کے لوگو(LOGO) کی رونمائی کرتے ہوئے بزم کے آعاز کاباضابطہ اعلان کیا گیا۔ اس موقع پر شہر اورنگ آباد کی انتہائی معتبر و موقر شخصیت پوفیسر ارتکاز افضل ، ادارہ ادب اسلامی کے ریاستی ذمہ دار پروفیسر شیخ عظیم الدین ، معروف شاعر و صحافی اور مقبول شہر ناموں کے کالم نگار خان شمیم خان بطور مہمانان خصوصی اسٹیج پرجلوہ افروز تھے۔
پروگرام کی ابتداءکلام ربانی کی تلاوت سے کی گئی بعد ازاں خان شمیم نے اورنگ ادب کی تاسیس پر تاریخی نظم پیش کی جس میں انھوں نے شہر اورنگ آباد کی مکمل ادبی تاریخ کو عمدگی سے سمیٹ دیا۔اس کے بعد شہر کی مشہور ادبی شخصیت و استاد شاعر جناب شاہ حسین نہری کی بزم اورنگ ادب پر لکھی گئی نظم کو ناظم اجلاس وبزم اورنگ ادب کے چیف سیکریٹری قاضی جاوید ندا نے پڑھا جس میں بزم کے تمام اراکین کی تعریف کی گئی ہے۔اس کے بعدبزم اورنگ ادب کے نائب صدر ڈاکٹر صدیقی صائم الدین نے تمام حاضرین کے سامنے بزم کے اغراض و مقاصد پیش کئے جو کہ بزم عالمگیر ادب سے استفادہ کردہ ہیں۔اجراءکے بعد اسٹیج پر موجود تمام معززین نے اپنے خیالات کا اظہار فرمایا ۔ جناب پروفیسر ارتکاز افضل نے بزم کے قیام پر مسرت کا اظہار فرماتے ہوئے تمام ممبران کی فرداً فرداً تعریف کی اور ان نوجوانوں کے ادب پر انھیں مبارکباد دیتے ہوئے مستقبل کے بڑے شاعر و کامیاب نثار کے خطاب سے نوازا۔ جناب نورالحسنین نے بزم کے تمام اغراض و مقاصد پر بات کرتے ہوئے بزم کی نہ صرف حوصلہ افزائی فرمائی بلکہ ہر قسم کی معاونت کا وعدہ بھی کیا۔ انھوں نے بزم کے بعض افراد کے ادب و کلام پر انتہائی خوشی کا اظہار فرماتے ہوئے ان نوجوانوں کو مسقبل کے استاذ کے خطاب سے نوازا جس پر تمام سامعین نے خوشی کا اظہار فرمایا۔افتتاحی اجلاس کے صدر جناب اسلم مرزا نے بزم کے صدر احمد اورنگ آبادی کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے تمام بزم کے اراکین کا فرداً فرداً نام لیااور ان کے ادب پر بات کرتے ہوئے ان نوجوانوں کی حوصلہ افزائی فرمائی۔ بطور صدرجناب اسلم مرزا نے ہر موڑ پر اپنی رہنمائی و تعاون کا تیقن دیا۔ واضح ہو کہ نورالحسنین ، ایڈوکیٹ اسلم مرزا اور پروفیسر ارتکاز افضل جیسی بڑی شخصیات اس بزم کے سر پرستوں میں شامل ہیں۔اس اجلاس کے اختتام پر ناظم اجلاس قاضی جاوید ندا ہی نے انجمن کی جانب سے تمام مہمانان و عمائدین شہر کا شکریہ ادا کیااور فوراً ہی طرحی مشاعرے کے آغاز کا اعلان بھی کیا ۔اسکے فوری بعد اردو غزل کے باوا آدم ولی اورنگ آبادی کے خزینہ تغزل سے دئیے گئے پانچ الگ الگ مصرعوں کی طرح پر ایک نادرالمثال مشاعرے کا آغاز ہوا۔ جس میں نہ صرف شہر اورنگ آباد کے استاد شعرائے کرام شامل ہوئے بلکہ اس موقع سے استفادہ کرتے ہوئے کئی دیگر علاقوں سے شعرائے کرام نے بھی مشاعرے میں شرکت فرمائی۔شہر بھر سے شامل ہونے والے شعرائے کرام میں پروفیسر ارتکاز افضل ، ایڈوکیٹ اسلم مرزا، خان شمیم ، رضا جالنوی، قاضی جاوید ندا،احمد اورنگ آبادی ، ذکی صدیقی ،صبا گنجوی،یوسف دیوان، ڈاکٹر یوسف صابر ،فاروق احمد ، سعد ملک، عمران رضوی،وسیم راہی، حکیم احمد حکیم ، عتیق احمد عقیق ، جمال چشتی،عبد الاحد، اشرف کاشف، سید طالب ، مصطفی خیری ، طالب احمد کے علاوہ خواتین میں تزئین فاطمہ ، صبا تحسین، آفرین خان شامل رہیں۔ بیرون شہر کے شعرائے کرام میںپروفیسر سلیم محی الدین پربھنی ، شفیع احمد شفیع پربھنی، الطاف اقبال پربھنی، جناب فیض سبحانی جالنہ ، جناب توصیف قاضی پونہ سے شامل ہوئے ۔اس طرحی مشاعرے کی صدارت پروفیسر ارتکاز افضل نے فرمائی جبکہ نظامت کے فرائض بہترین شاعر جناب جاوید ندا نے انجام دیے ۔اس طرحی مشاعرے میں ایڈوکیٹ اسلم مرزا نے ولی کے رنگ ہی میں اسی کے اسلوب میں بڑی خوبصورت غزل پیش کی جس پر طرحی مشاعرے کے صدر اور عمائدین شہر سے انھیں خوب داد ملی۔پروفیسر ارتکاز افضل نے نہ صرف بہت خوبصورت اور دکنی مزاج سے مزین کلام پیش کیا بلکہ اپنے صدارتی خطاب میں طرحی مشاعرے کے اصول و ضوابط اور بالخصوص غزل کی روایت پر سیر حاصل گفتگو فرمائی۔ اس پروگرام کی کامیابی کی خاطر جن حضرات نے رات دن ایک کئے ان میں صدر بزم اورنگ ادب احمد اورنگ آبادی کے علاوہ چیف سیکریٹری قاضی جاوید ندا ،عمران رضوی ، وسیم راہی،سعد ملک ، بلال انوراور صدیقی صائم الدین پیش پیش رہے ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!