Published From Aurangabad & Buldhana

MPsو MLAs کے خلاف 1017 مقدمات زیر التواء

کل 1233 مقدمات درج ہوئے تھے، ان مقدمات کے لئے پورے ملک میں 12 خصوصی عدالتیں بنائی گئی تھی

نئی دہلی :سپریم کورٹ میں مرکزی حکومت نے بتایا ہے کہ 11 ریاستوں سے ملی اطلاع کے مطابق داغی ایم پی اور ایم ایل اے کے خلاف 1017 معاملے زیر التوا ہیں۔ یہ معاملے خصوصی عدالتوں میں ٹرانسفر کیے گئے ہیں۔ کل 1233 معاملوں میں 1017 کیس پینڈنگ ہیں جبکہ اس دوران 136 کیس حل کیے جا چکے ہیں۔ سپریم کورٹ کے آرڈر کے بعد 12 خصوصی عدالتوں کی تشکیل ہوئی تھی۔ دہلی میں 2 خصوصی عدالتیں ہے جبکہ یو پی ، کیرل، بہار، مغربی بنگال، تمل ناڈو، مہاراشٹر ، مدھیہ پردیش ، آندھر پردیش ، تلنگانہ اور کرناٹک میں ایک ایک خصوصی عدالت بنائی گئی ہے۔ جن میں ممبران پارلیمنٹ اور ممبران اسمبلی کے خلاف زیر سماعت مقدمات کی سنوائی چل رہی ہے۔ این بی ٹی کے مطابق سپریم کورٹ کو بتایا گیا کہ باقی ریاستوں میں ایم پی اور ایم ایل اے کے خلاف زیر سماعت مقدمات کی تعداد 65 ہے۔ ایسے میں وہاں ریگولر کورٹ میں فاسٹ ٹریک سسٹم سے مقدمات کا نپٹارا کیا جا رہا ہے۔ معاملے میں تمام ریاستوں کو ہدایات بھی جاری کی جا چکی ہیں۔ سپریم کورٹ نے 30 اگست کو مرکزی حکومت سے اس بات کو لے کر ناراضگی ظاہر کی تھی کہ اس نے کورٹ کے آرڈر کے باوجود ایم ایل اے اور ایم پی کے خلاف زیر سماعت مقدمات کی تفصیل پیش نہیں کی ہے۔ سپریم کورٹ کے جسٹس رنجن گوگوئی کی قیادت والی بنچ نے کہا تھا کہ مرکزی حکومت نے تیاری نہیں کی ہے اور کورٹ کے مانگے جانے پر معلومات فراہم نہیں کرائی۔ حکومت ہمیں مجبور کر رہی ہے کہ ہم آرڈر جاری کریں جو ہم اس اسٹیج پر نہیں کرنا چاہتے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!