Published From Aurangabad & Buldhana

یوگی کی پولس کا کمال، انتقال کر چکے افسر کا کیا ٹرانسفر

اتر پردیش پولس کی لاپروائی جمعہ کے روز اس وقت کھل کر سامنے آ گئی جب ڈی ایس پی سطح کے کچھ افسران کے تبادلے کی فہرست جاری کی گئی اور اس میں ایک ایسے افسر کا نام بھی شامل تھا جن کا انتقال ہو چکا ہے۔ اتر پردیش کی یوگی حکومت میں پولس انتظامیہ کی بے حسی کا ہی نتیجہ تھا کہ فہرست میں 19ویں نمبر پر ڈی ایس پی ستیہ نارائن سنگھ کا نام دیا گیا جن کا بہت پہلے ہی انتقال ہو چکا ہے۔

میڈیا ذرائع سے موصول ہونے والی خبروں کے مطابق ستیہ نارائن سنگھ کا اس سے پہلے ڈی ایس پی (ایل آئی یو)، ایودھیا کے عہدہ پر ٹرانسفر کیا گیا تھا اور اس فہرست میں اس ٹرانسفر آرڈر کو منسوخ کرنے کی اطلاع تھی۔ ان کے نام کے آگے لکھا تھا کہ ایودھیا میں ان کے ٹرانسفر حکم کو ختم کیا جاتا ہے اور وہ ڈی ایس پی (انٹلی جنس)، ڈی جی پی ہیڈ کوارٹر کے عہدہ پر بنے رہیں گے۔ غلطی سامنے آنے کے بعد پولس محکمہ میں افرا تفری کا ماحول پیدا ہو گیا اور آخر کار ڈی جی پی او پی سنگھ کو غلطی پر معافی مانگنی پڑی۔

ڈی جی پی نے اپنے ایک ٹوئٹ میں پولس محکمہ کی غلطی کا اعتراف کیا ہے اور لکھا ہے کہ ’’یہ انتہائی افسوسناک ہے کہ ڈی ایس پی کے ٹرانسفر کی جو فہرست جاری کی گئی اس میں مرحوم ستیہ نارائن سنگھ کا نام بھی موجود تھا۔ ایسی غلطی کو معاف نہیں کیا جا سکتا ہے اور پولس محکمہ کا سربراہ ہونے کے ناطے میں معافی کا طلب گار ہوں۔ میں اس معاملے میں سخت کارروائی کروں گا اور طے کروں گا کہ دوبارہ ایسی کوئی غلطی نہ ہو۔‘‘

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!