Published From Aurangabad & Buldhana

یمن :جھڑپوں میں شدت، فضائی حملہ میں 84 افراد ہوئے ہلاک

شورش زدہ یمن میں ایک بار پھر اتحادی و یمن کی فوجوں اور حوثیوں باغیوں کے درمیان جھڑپوں میں شدت آگئی ہے۔

شورش زدہ یمن میں ایک بار پھر اتحادی و یمن کی فوجوں اور حوثیوں باغیوں کے درمیان جھڑپوں میں شدت آگئی ہے۔اس سے قبل بحیرہ احمر کے ساحل پر واقع شہر الحدیدہ میں اقوام متحدہ کے امن مذاکرات کے انعقاد میں ناکامی کے بعد ہونے والی جھڑپ اور فضائی حملوں سے 84 افراد ہلاک ہوگئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق حوثیوں کے زیر تسلط صوبہ الحدیدہ کے ذرائع کا کہنا تھا کہ مذاکرات کے منسوخ ہونے کے بعد سے 11 فوجی اور 73 باغی ہلاک ہوچکے ہیں۔ جھڑپ کے نتیجے میں درجنوں باغی اور کم ازکم 17 فوجی بھی زخمی ہوئے ہیں۔

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی فضائیہ سمیت حکومتی حمایت یافتہ اتحاد نے یمن میں 70 فیصد غذا اور دیگر امدادی وسائل کے داخلے تمام راستوں کو بلاک کر رکھا ہے۔فوجی حکام کے مطابق اتحاد کی جانب سے یمن کے شہرصنعا کے باغیوں کے قابض علاقے کے دارلحکومت کی طرف جانے والی مرکزی سڑک کو بھی بند کردیا گیا تھا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!