Published From Aurangabad & Buldhana

ہرن کیس: سلمان کے جھوٹے حلف نامہ معاملے میں فیصلہ پربحث مکمل، فیصلہ 17 جون کو

چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ جودھپور ضلع میں فلم اداکار سلمان خان کے ذریعہ سی آر پی سی کی دفعہ 340 کے تحت پیش کئے دو الگ الگ حلف نامہ پر منگل کو مدعا علیہان اور استغاثہ کی جانب سے بحث مکمل ہو گئی۔ سماعت کے دوران سلمان خان کے وکیل نے عدالت میں کہا کہ سلمان خان کا کسی بھی طرح کا یہ مقصد نہیں تھا کہ وہ جھوٹا حلف نامہ دے، ایسے میں اس کے خلاف کسی طرح کی کارروائی کرنا جائز نہیں ہے۔اب کورٹ 17 جون کو اپنا فیصلہ سنائے گا کہ اس معاملے میں سلمان کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے یا نہیں۔
غور طلب ہے کہ ٓارمس ایکٹ کیس میں بری ہو چکے سلمان خان کے خلاف حکومت کی جانب سے سی آر پی سی کی دفعہ 340 کے تحت دوالگ الگ حلف نامہ عدالت میں پیش کئے گئے تھے۔ دوسری جانب سے سلمان کے وکیل ہستی مل سارسوت کی جانب سے پیش کئے گئے حلف نامہ میں ہرن شکار کیس کے ریسرچ آفیسر للت بوڑا کے خلاف جھوٹی گواہی دینے اور جھوٹا حلف نامہ پیش کرنے کے الزام لگایا گیا تھا۔ سلمان خان نے آرمس ایکٹ کیس کی سماعت کے دوران ایک حلف نامہ پیش کیا تھا کہ اس کے ہتھیار کا لائسنس غائب ہو گیا ہے جبکہ اسی دوران ہتھیارکا لائسنس ممبئی میں اپ گریڈ کے لئے پیش کیا گیا تھا۔ ایسے میں استغاثہ نے سی آر پی سی کی دفعہ 340 کے تحت الزام لگایا تھا کہ سلمان نے جھوٹا حلف نامہ پیش کرتے ہوئے عدالت کو گمراہ کیا ہے۔ اس معاملے کی سماعت کے دوران سلمان کو اپنا لائسنس عدالت میں جمع کروانا تھا لیکن سلمان کی جانب سے حلف نامہ دے کر بتایا گیا کہ اس کا لائسنس کھو گیا جبکہ لائسنس تجدید کے لئے دیا ہوا تھا۔
استغاثہ نے اس حلف نامہ کو جھوٹا قرار دیتے ہوئے عدالت کو گمراہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے تعزیرات 340 کے تحت کارروائی کرنے کا حلف نامہ 2006 میں پیش کیا تھا جس پر مسلسل سماعت کے بعد منگل کو اس پر فیصلہ کی تاریخ 17 جون مقرر کیا ہے۔ استغاثہ کے دوسرے حلف نامہ میں سلمان کے ذریعہ پیشی کے دوران غائب رہنے کے دوران حاضری معافی میں جھوٹا بہانہ بنانے کا الزام لگایا گیا ہے۔ جھوٹے حلف نامہ اور جھوٹی گواہی دینے پر ایسے گواہوں کے خلاف سی آر پی سی کی دفعہ 340 کے تحت حکومت عدالت میں شکایت کرتی ہے۔ ایسے گواہ کے خلاف عدالت میں جھوٹا بیان دینے کے معاملے میں تعزیرات ہند کی دفعہ 193 کے تحت مقدمہ چلایا جاتا ہے۔ اس معاملے میں مجرم پائے جانے پر زیادہ سے زیادہ سات سال قید کی سزا کا قانون ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!