Published From Aurangabad & Buldhana

ہاتھرس عصمت دری: یوگی نے ایس آئی ٹی جانچ کی مدت میں کی توسیع، آج داخل کرنی تھی رپورٹ

لکھنؤ: ہاتھرس گینگ ریپ کیس کی جانچ کے لئے تشکیل خصوصی جانچ ٹیم (ایس آئی ٹی) کو بدھ کے روز اپنی رپورٹ داخل کرنی تھی لیکن اس کی مدت میں توسی کر دی گئی ہے۔ ایک سینئر عہدیدار نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے ایک حکم دے کر ایس آئی ٹی جانچ کے لئے دئے دئے گئے وقت میں 10 دن کی توسی کر دی گئی ہے۔

یوپی کے محکمہ داخلہ کے ایڈیشنل چیف سکریٹری اونیش اوستھی نے خبر رساں ایجنسی اے این آئی کو بتایا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کے حکم کے مطابق ایس آئی ٹی کو اپنی رپورٹ پیش کرنے کے لئے جو وقت دیا گیا تھا اس میں مزید 10 دن کی توسیع کر دی گئی ہے۔ ہاتھرس کے ایک گاؤں میں 17 ستمبر کو مبینہ اجتماعی عصمت دری اور تشدد کا نشانہ بننے والی ایک 19 سالہ لڑکی کی گذشتہ ہفتے دہلی کے ایک اسپتال میں موت ہو گئی تھی۔ ملک بھر میں پائے جانے والے غم و غصے کے پیش نظر سی ایم یوگی نے ایس آئی ٹی تحقیقات کے لئے ٹیم کا اعلان کیا تھا۔

اس معاملے میں، یوپی کی حکومت اور پولیس کو جرم چھپانے کے الزامات کا سامنا ہے۔ پولیس پر الزام ہے کہ اس نے متاثرہ کے اہل خانہ کی طرف سے کی جانے والی شکایت پر فوری کارروائی نہیں کی لیکن پولیس کا کردار اس وقت مزید شکوک و شبہات کی زد میں آیا جب 29 ستمبر کو ہاتھرس پولیس متاثرہ کی موت کے بعد اس کی لاش گاؤں میں گئی اور کنبہ کی اجازت کے بغیر رات کو ڈھائی بجے اس کی آخری رسومات ادا کر دیں۔ اہل خانہ نے الزام لگایا ہے کہ انہوں نے اگلی صبح پولیس سے اپنی بیٹی کی آخری رسومات ادا کرنے کی گزارش کی تھی لیکن پولیس نے ان کی بات نہیں مانی۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!