Published From Aurangabad & Buldhana

گھر کے بزرگوں کے درمیان بچوں کی تربیت دونوں کے لئے عظیم تحفہ: ریسرچ

بچوں کی پرورش و انکی ذہنی و جذباتی نشو و نمااگر گھر کے بزرگ یعنی دادا ،دادی یا نانا و نانی کے درمیان کی جائے یا انکے ذریعہ کا جانا ان بچوں کے لئے والدین کا سب سے عظیم تحفہ ہے اس طرح کی بات ماہرین نے ایک ریسرچ کے ذریعہ کی۔ریسرچ کے مطابق گھر کے بزرگوں کے درمیان بچوں کی تربیت سے انکی زندگی زرخیز اور عمدگی کا جانب جاتی ہے۔اس کے ذریعہ بچے رشتہ و تعلقات کی اہمیت کو سمجھتے ہیں اور انکے دلوں میں اخلاق و ہمدردی پیدا ہوتی ہے۔گھر کے بزرگ جس طرح سے بچوں کا خیال رکھتے ہیں اس وجہ سے بچوں کی پرورش خوشی کے جذبات میں ہوتی ہے اور انکے اعتماد میں اضافہ ہوتا ہے نتیجتاً وہ کم ہی افسردگی کا شکار ہوتے ہیں۔

ماہرین کے ذریعہ کی گئی اس ریسرچ میں تقریباً 374بزرگوں اور 356بچوں کی زندگیوں کو تقریباً 19سالوں تک مشاہدہ کیا گیا۔اس ریسرچ میں یہ بھی پتہ چلا ہے ، چونکہ بچے Emotional Intelligence کی صلاحیت کو دوسروں کا مشاہدہ کر سیکھتے ہیں اور جو کہ IQسے زیادہ اہمیت رکھتا ہے گھر کے بزرگوں کے ساتھ رہنے سے اس میں شاندار طریقہ سے مثبت اضافہ ہوتا ہے۔ساتھ ہی گھر کے بزرگ بچوں کے ساتھ بالکل دوستانہ تعلقات سے رہتے ہیں انکی سطح پر جاکر انکے ساتھ کھیلتے یا وقت گذارتے ہیں جس سے بچوں میں ڈر کے بجائے ہمت پروان چڑھتی ہے۔

ساتھ ہی والدین مصروفیات کی وجہ سے مستقل وقت نہیں دے پاتے جبکہ گھر کے بزرگوں کو بچوں کے ساتھ وقت بتانا بھی اچھا لگتا ہے جس کے نتیجہ میں خود گھر کے بزرگوں کی زندگی بھی خوش حال گذرتی ہے ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!