Published From Aurangabad & Buldhana

گارگی کالج چھیڑخانی معاملہ : تمام ملزمین کو ضمانت، ہائی کورٹ میں اگلی سماعت 17 فروری کو

نئی دہلی : گارگی کالج میں طالبات کے ساتھ چھیڑخانی کے معاملے میں گرفتار سبھی دس ملزمین کو ساکیت عدالت سے جمعہ کو ضمانت مل گئی۔ عدالت نے تمام ملزمان کو 10-10 ہزار روپے کے مچلکے پر رہا کیا ہے۔ اس سے قبل ملزمان کو عدالتی تحویل میں بھیجا گیا تھا۔ ادھر، اس معاملہ کی دہلی ہائی کورٹ میں 17 فروری کو سماعت ہوگی۔


یہ واقعہ چھ فروری کا ہے جب گارگی کالج کے سالانہ پروگرام کے دوران کچھ لڑکے کالج کا دروازہ توڑ کر زبردستی کالج کے کیمپس میں گھس گئے اور وہاں طالبات کےساتھ چھیڑ خانی کی۔اس معاملے کے طول پکڑنے پر دہلی پولیس نے بدھ کو دس لوگوں کو گرفتار کیا تھا۔

سی سی ٹی وی فوٹیج سے انکشاف ہوا تھا کہ تمام گرفتار شدگان نے کالج کے گیٹ کو توڑ دیا تھا اور زبردستی کالج میں گھس گئے۔ اس کے بعد انہوں نے وہاں طالبات کے ساتھ چھیڑ خانی اور بدتمیزی کی۔ گرفتار کئےگئے نوجوانوں کی عمر 18سے 25 برس کے درمیان ہے۔ طالبات نے اس معاملہ کی شکایت 9 فروری کو حوض خاص تھانہ میں درج کرائی تھی۔

ہائی کورٹ میں 17 فروری کو سماعت
گارگی کالج کا معاملہ ہائی کورٹ میں بھی پہنچ گیا ہے اور اس پر وہاں 17 فروری کو سماعت ہونے جا رہی ہے۔ وکیل ایم ایل شرما نے اس حوالہ سے ایک مفاد عامہ عرضی داخل کی ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ اس پورے معاملے کی تفتیش سی بی آئی سے کرائی جائے۔ عرضی گزار نے دلیل دی ہے کہ ہائی کورٹ میں سماعت میں وقت لگ سکتا ہے ایسے حالات میں الیکٹرانک شواہد کو یا تو ختم ہو سکتے ہیں یا پھر ان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ ہو سکتی ہے۔

ایم ایل شرما نے اس سے قبل سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی تھی لیکن سپریم کورٹ نے سماعت سے انکار کرتے ہوئے ہائی کورٹ میں سرے رجوع کرنے کی ہدایت دی۔ اس کے بعد شرما نے دہلی ہائی کورٹ میں عرضی دائر کی۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!