Published From Aurangabad & Buldhana

کیرالہ کے ایک کنویں سے پھیلا نپاہ وائرس ! کرناٹک میں بھی ملے دو مشتبہ مریض

ٍکیرالہ کے کوزی کوڈ اور ملاپورم اضلاع میں نپاہ وائرس کی وجہ سے اب تک 10 افراد کی موت ہوگئی ہے۔ جبکہ 9 دیگر مریض فی الحال اسپتال میں بھرتی ہیں۔ محکمہ صحت کے ذرائع کے مطابق اس 10 کے علاوہ دو دیگر لوگوں کی بھی موت ہوئی ہے۔ حالانکہ ابھی اس بات کی تصدیق نہیں کی جاسکی ہے کہ کیا ان کی موت بھی نپاہ وائرس کی وجہ سے ہوئی ہے۔

کیرالہ کے وزیر صحت کے کے شیلجہ نے بتایا کہ نپاہ وائرس سے نپٹنے کا ہمارے پاس پہلے سے کوئی تجربہ نہیں ہے۔ ایسے حالات ہم نے پہلے کبھی نہیں دیکھے ۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے بتایا کہ عالمی صحت تنظیم (ڈبلیو ایچ او) کو کیرالہ میں وائرس پھیلنے کے بارے میں مطلع کردیا گیا ہے۔
وہیں ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ پھل کھانے والے اس وائرس کا اب تک کوئی علاج نہیں مل پایا ہے۔ ادھر ذرائع کے مطابق کچھ متاثرہ لوگوں کے رابطہ میں آئے کل 116 لوگوں کو الگ تھلگ رکھا گیا ہے۔ ان میں سے 94 لوگوں کو ان کے گھروں میں اور 22 کو مختلف اسپتالوں میں رکھا گیا ہے۔

دریں اثنا حکومت سے طرف سے بتایا گیا ہے کہ فی الحال اس بیماری کی اصل وجہ کی جانچ کی جارہی ہے۔ وہیں صحت سے وابستہ اہلکاروں کی ابتدائی چھان بین میں پایا گیا ہے کہ متاثرین جس کنویں سے پانی لیتے تھے ، وہاں کئی چمگادر مردہ پائے گئے ہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!