Published From Aurangabad & Buldhana

کک نے رچرڈز اور ہیمنڈ کو پیچھے چھوڑا

میلبورن انگلینڈ کے اوپنر ایلیسٹیر کک نے چوتھے ایشز ٹیسٹ کے تیسرے دن ناٹ آؤٹ 244 کی ریکارڈ اننگز کھیل کر میلبورن میدان میں کسی غیر ملکی کھلاڑی کی اولین اننگز کا نیا ریکارڈ بنا دیا۔ کک نے میلبورن میدان پر ویسٹ انڈیز کے ویوین رچرڈز کی 1984 میں کھیلی 208 رنز کی اننگز کو پیچھے چھوڑ دیا۔اس سے پہلے انہوں نے اس میدان پر انگلینڈ کی جانب سے بہترین ذاتی اسکور کرنے والے والی ھیمنڈ کے ریکارڈ کو بھی پیچھے چھوڑ دیا جنہوں نے 1928 میں یہاں 200 رن بنائے تھے ۔ کک اسی اننگز کے دوران سب سے زیادہ ٹیسٹ رنز بنانے والوں کی فہرست میں بھی چھٹے نمبر پر پہنچ گئے ۔اپنا 151 واں ٹیسٹ کھیل رہے کک کے نام پر اب 11956 ٹیسٹ رنز درج ہو گئے ہیں اور وہ 12000 رن پورے کرنے سے صرف 44 رن دور ہیں۔ اس سال کسی بھی بلے باز کا ٹیسٹ میں یہ بہترین اسکور ہے ۔اس سے پہلے ہندستانی کپتان وراٹ کوہلی نے سری لنکا کے خلاف 243 رنز کی ڈبل سنچری بنائی تھی۔کک اور وراٹ دنیا کے دو ہی ایسے بلے باز ہیں جنہوں نے اس سال ڈبل سنچری لگائی ہے ۔ کک انگلینڈ کے پہلے ایسے کھلاڑی بن گئے ہیں جنہوں نے ٹیسٹ میں 11 ویں بار 150 یا اس سے زیادہ رن بنائے ہیں
کک کی ڈبل سنچری سے انگلینڈ کا منہ توڑ جواب
میلبورن:سابق کپتان اور اوپنر ایلیسٹیر کک (ناٹ آؤٹ 244) کی شاندار ڈبل سنچری سے انگلینڈ نے آسٹریلیا کو کرارا جواب دیتے ہوئے چوتھے ایشز ٹیسٹ کے تیسرے دن جمعرات کو نو وکٹ پر 491رنز بنا کر اپنی پوزیشن انتہائی مضبوط کر لی۔ انگلینڈ کے پاس اب 164 رنز کی برتری ہو گئی ہے اور اس کا ایک وکٹ باقی ہے ۔کک 409 گیندوں کا سامنا کرکے 244 رنز بنا کر کریز پر ڈٹے ہوئے ہیں۔کک نے اپنی اس بہترین اننگز میں 27 چوکے لگائے ہیں۔کک کی یہ پانچویں ڈبل سنچری ہے اور روایتی حریف آسٹریلیا کے خلاف ان کا یہ سب سے بہترین اسکور ہے ۔اس سے پہلے آسٹریلیا کے خلاف ان کا بہترین ا سکور 235 رنز تھا۔ان کی یہ مجموعی 33 ویں سنچری ہے ۔ آسٹریلیا نے پہلی اننگز میں 327 رن بنائے تھے لیکن کک کی ڈبل سنچری کے دم پر انگلینڈ نے مضبوط برتری بنا کر کنگاروؤں پر اپنا شکنجہ کس دیا ہے ۔سیریز میں 0۔3 سے پچھڑے انگلینڈ نے ایشز میں پہلی بار بااثر مظاہرہ کیا ہے ۔انگلینڈ نے تیسرے دن دو وکٹ پر 192 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا تھا۔ کک نے 104 اور جو روٹ نے 49 رنز سے اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔انگلینڈ نے دن بھر کے کھیل میں 299 رن جوڑے اور سات وکٹ گنوائے ۔کپتان روٹ 61 رن بنا کر آؤٹ ہوئے ۔ کک نے بعد کے بلے بازوں کے تعاون سے انگلینڈ کی اننگز کو آگے بڑھائے رکھا اور آسٹریلیا کے اسکور کو پیچھے چھوڑ دیا۔کک نے اسٹیورٹ براڈ (56) کے ساتھ نویں وکٹ کے لئے 100 رن کی قیمتی شراکت کی۔ براڈ ایک متنازعہ کیچ کے چلتے آؤٹ ہوئے ۔انہوں نے پیٹ کمنز کی گیند کو بلند کھیل دیا، عثمان خواجہ نے ڈائیو لگا کر نیچا کیچ لپکا لیکن یہ واضح نہیں تھا کہ خواجہ نے صفائی سے کیچ لپکا یا نہیں۔ معاملہ تیسرے امپائر کے پاس گیا اور کافی ری پلے دیکھنے کے بعد براڈ کو آؤٹ قرار دیا گیا۔براڈ اس فیصلے سے مطمئن نہیں تھے لیکن انہیں پویلین لوٹنا پڑا۔ براڈ نے 63 گیندوں پر 56 رنز کی اننگز میں آٹھ چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!