Published From Aurangabad & Buldhana

کورونا کا قہر: مہاراشٹر میں مکمل لاک ڈاؤن نہیں لیکن پابندیوں میں اضافہ

یو این آئی

کورونا کے بحران سے مقابلہ کرنے کے لیے مہاراشٹر حکومت نے کچھ سخت فصیلہ کرتے ہوئے کل شام سے رات کے کرفیو کا اعلان کر دیا ہے جبکہ دن میں دفعہ144لاگو رہے گی جس کے تحت 5 سے زائد لوگوں کے ایک ساتھ جمع ہونے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ یہ اطلاع کل کابینی وزیر نواب ملک نے دی ہے۔

نواب ملک نے کہا ہے کہ کابینہ کی میٹنگ میں کورونا کو روکنے کے لیے کچھ اہم فیصلے لئے گئے ہیں ۔مہاراشٹر میں رات 8 بجے سے صبح 7 بجے تک کرفیو لاگورہے گا،بقیہ اوقات میں 144نافذ رہے گی۔پانچ سے زیادہ لوگوں کو ایک ساتھ جمع ہونے پر پابندی رہے گی۔سبھی مال، ریسٹورنٹ، بار بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ٹیک اوے ودیگربنیادی ضروریات کی سروسیس چالو رہیں گی۔

نئے ضوابط کے مطابق سرکاری دفاتر پچاس فصید ملازمین سے چلیں گے۔انڈسٹری پوری طرح سے چالو رہے گی، ورکر پر کسی بھی طرح کی کوئی پابندی نہیں رہےگی۔کنسٹرکشن سائٹ جہاں ورکروں کے رہنے کا انتظام ہے وہ تمام کنسٹرکشن سائٹ چالو رہیں گی۔سرکاری ٹھیکے جہاں تعمیری کام جاری ہے وہ تمام کے تمام جاری رہیں گے۔ سبزی منڈی وغیرہ پر کسی بھی طرح کی کوئی پابندی نہیں رہے گی، البتہ بھیڑ لگانے پر پابندی ہوگی۔اسی کے ساتھ یہ بھی فیصلہ کیا گیا ہے کہ جمعہ رات 8 بجے سے پیرصبح 7 بجے تک ویک اینڈ اسٹریک لاک ڈاؤن مہاراشٹر میں رہے گا۔

فلمی صنعت کےتعلق سے کہا گیا ہےکہ شوٹنگ میں جہاں بھیڑ نہیں رہے گی وہاں کوئی پابندی نہیں رہے گی، لیکن تھیٹرس بند رہیں گے۔ٹرانسپورٹ کا نظام جاری رہے گا۔رکشہ، ٹیکسی، پرائیویٹ گاڑیاں، بسیں وٹرینیں جاری رہیں گی،البتہ ماسک لگانا لازمی ہوگا۔پبلک ٹرانسپورٹ کی جو صلاحیت ہوگی اس سے نصف لوگ ہی اس میں سفر کریں گیں۔یہ فیصلہ متفقہ طور پر لیا گیا ہے اورفیصلہ لینے سے پہلے وزیراعلیٰ نے حزبِ مخالف لیڈر، منسے کے لیڈر راج ٹھاکرے، ہوٹل انڈسٹری، فیکٹریوں کے مالکان اورفلم انڈسٹری کے لوگوں سے بھی بات کی ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!