Published From Aurangabad & Buldhana

کملیش تیواری کو پہلے سے ہی اپنے قتل کا ڈر تھا!سی ایم یو گی پر لگائے تھے سنگین الزام

اترپردیش پولس ہندو سماج پارٹی کے رہنما کملیش تیواری قتل کو 24 گھنٹے کے اندر حل کرنے کا لاکھ دعوی کر رہی ہو، لیکن سوشل میڈیا پر کملیش تیواری کا ایک ویڈیو وائرل ہو رہا ہے، جو یوپی پولس کی قلعی کھولنے کے لئے کافی ہے۔ اس ویڈیو کے مطابق کملیش تیواری کو اپنے قتل کا پہلے سے ہی احساس تھا، جس کی معلومات پولس کو دی تھی، انہوں نے موجودہ حکومت یعنی یوگی حکومت پر کئی سنگین الزام لگائے ہیں۔


صحافی ابھیسار شرما نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کملیش تیواری کے ایک ویڈیو کا اشتراک کیا ہے۔ اس ویڈیو میں کملیش تیواری یوگی حکومت اور یوپی پولس پر سنگین الزام لگا رہے ہیں۔ ویڈیو میں کملیش تیواری کہہ رہے ہیں، "بی جے پی کا کوئی کارکن یا عہدیدار اگر مرتا ہے تو میں یہ نہیں سوچتا کہ وہ سنگھ اور بی جے پی کا ہے، میں اس کے خلاف اواز اٹھاتا ہوں کیونکہ ہم صرف یہ سوچتے ہیں کہ وہ ہندو ہے‘‘۔

ویڈیو میں کملیش تیواری آگے کہتے ہیں، ’’بھلے یہ لوگ (بی جے پی والے) ہمارے خلاف سازش رچتے ہیں، لیکن ان کے کارکنان کے لئے مجھے درد ہوتا ہے، جو میرے پیچھے دن رات پڑے ہوئے ہیں اور میرے قتل کی سازش کرتے ہیں۔ یوگی حکومت کے آتے ہی میری سیکورٹی ہٹا دی گئی، لیکن پھر بھی میں لڑ رہا ہوں، اپنے دم پر هندوؤں کے لئے لڑتا رہوں گا۔ حالنکہ ویڈیو کب کا ہے اور کس نے بنایا ہے اس کی تصدیق ‘قومی آواز’ نہیں کرتا ہے۔

دوسری طرف کملیش تیواری کے قتل پر ان کی ماں کسم تیواری نے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ پر سنگین الزام لگائے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ یوگی حکومت کی لاپرواہی کی وجہ سے میرے بیٹے کا قتل ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی یوگی میرے بیٹے سے جلتے تھے، کملیش تیواری کی ماں نے سی ایم یوگی کے ساتھ ساتھ یوپی پولس پر بھی سنگین الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ناکہ پولس کی ملی بھگت سے اس قتل کو انجام دیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا، ’’اکھلیش حکومت میں میرے بیٹے کملیش تیواری کی حفاظت میں 17 سیکورٹی اہلکار تعینات کیے گئے تھے، لیکن ریاست میں یوگی حکومت آتے ہی کملیش کی حفاظت میں کمی کر دی گئی، یوگی حکومت میں سیکورٹی کے نام پر 4 جوانوں کو لگایا تھا۔

بتا دیں کہ گزشتہ روز جمعہ کو کملیش تیواری کی لکھنؤ کے ناکہ علاقہ میں گلا کاٹ کر قتل کر دیا گیا تھا، پولس کو موقع سے ایک ریوالور بھی ملا تھا، اس دوران سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آیا ہے، جس میں قاتل نظر آ رہے ہیں، اس قتل کے بعد یوپی کی سیاست گرم ہوگئی ہے۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!