Published From Aurangabad & Buldhana

کشمیر میں ناسازگار موسم کی وجہ سے امرناتھ یاترا مسلسل دوسرے دن بھی بدستور معطل

سری نگر۔ وادی کشمیر میں ناسازگار موسم کی وجہ سے سطح سمندر سے 13 ہزار 500 فٹ بلندی پر واقع امرناتھ گھپا کی یاترا ہفتہ کو مسلسل دوسرے دن بھی معطل رہی۔ یاترا عہدیداروں کے مطابق گذشتہ 48 گھنٹوں کے دوران ہونے والی بارشوں کے نتیجے میں دونوں یاترا راستوں پہلگام اور بال تل پر پھسلن پیدا ہوگئی ہے۔ تاہم گذشتہ دو دنوں کے دوران قریب 2600 یاتریوں نے امرناتھ گھپا میں شیولنگم کے درشن کئے ہیں۔

سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’مسلسل بارش اور یاترا راستوں پر پھسلن پیدا ہونے کی وجہ سے دونوں راستوں بشمول مختصر بال تل روٹ اور روایتی پہلگام راستوں پر یاترا بدستور معطل رکھی گئی ہے‘۔ انہوں نے بتایا ’کسی بھی یاتری کو پوتر گھپا کی طرف جانے کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔ جن یاتریوں نے گذشتہ دو دنوں کے دوران پوتر گھپا میں شیولنگم کے درشن کئے تھے، کو وہیں روکے رکھا گیا ہے‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ یاترا کو معطل کرنے کا اقدام یاتریوں کی سیفٹی کے لئے لیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا ’یاترا کو یاتریوں کی سیفٹی کے لئے معطل کیا گیا ہے۔ موسم میں بہتری آنے کے ساتھ ہی یاتریوں کو آگے جانے کی اجازت دی جائے گی‘۔

وہیں، مقامی انتظامیہ کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ یاترا کی معطلی کی وجہ سے ہزاروں کی تعداد میں یاتری پہلگام اور بال تل بیس کیمپوں میں رکے ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا ’ہماری طرف سے امرناتھ یاتریوں کو ہر ممکن سہولیت فراہم کی جارہی ہے‘۔ واضح رہے کہ جنوبی کشمیر کے مشہور سیاحتی مقام پہلگام سے قریب 40 کلو میٹر دور پہاڑی گھپا میں بھگوان شیو سے منسوب برفانی عکس (شیولنگ)کے درشن کے لئے ہر سال لاکھوں کی تعداد میں شردھالو کشمیر آتے ہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!