Published From Aurangabad & Buldhana

کسان بل 2020 : راجیہ سبھا میں ہنگامہ کرنے پر ڈیریک اوبرائن اور سنجے سنگھ سمیت 8 اپوزیشن اراکین پارلیمنٹ معطل

نئی دہلی : کسان بل کو لے کر راجیہ سبھا میں ہنگامہ کرنے پر 8 اپوزیشن اراکین پارلیمنٹ کو معطل کردیا گیا ہے۔ معطل ہونے والے اراکین پارلیمنٹ میں ترنمول کانگریس کے ڈیریک اوبرائن بھی شامل ہیں۔ ان اراکین پارلیمنٹ کو ایک ہفتے کے لئے معطل کیا گیا تھا، لیکن معطل ہونے کے بعد بھی یہ ایوان میں بیٹھے رہے اور ہنگامہ کر رہے تھے، لہٰذا چیئرمین نے بعد میں ان سبھی اراکین پارلیمنٹ کو پورے مانسون سیشن کے لئے معطل کردیا ہے۔ معطل ہونے والے اراکین پارلیمنٹ میں ڈیریک اوبرائن، سنجے سنگھ، رپون بورا، نظیر حسین، کے کے راگیش، اے کریم، راجیو ساٹو، ڈولا سین شامل ہیں۔ بی جے پی اراکین پارلیمنٹ نے ان کی شکایت کی تھی، جس کے بعد چیئرمین وینکیا نائیڈو نے ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی ان اراکین پارلیمنٹ کے خلاف کارروائی کی۔

اتوار کو ایوان میں ہوئے سانحۃ پر چیئرمین وینکیا نائیڈو نے کہا کہ یہ راجیہ سبھا کے لئے سب سے خراب دن تھا۔ کچھ اراکین پارلیمنٹ نے پیپر پھینکا، مائیک کو توڑ دیا۔ رول بک کو پھینکا گیا۔ اس حادثہ سے میں بے حد مایوس ہوں۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ڈپٹی چیئرمین کو دھمکی دی گئی۔ ان پر قابل اعتراض تبصرہ کیا گیا۔


راجیہ سبھا چیئرمین وینکیا نائیڈو نے مزید کہا- ’پارلیمنٹ کا یہ برتاو انہتائی شرمناک اور قابل مذمت ہے۔ میں اراکین پارلیمنٹ کو مشورہ دیتا ہوں، برائے مہربائی خود احتسابی کیجئے’۔

راجیہ سبھا میں کیا ہنگامہ ہوا تھا
دراصل راجیہ سبھا میں اتوار کو دو اہم کسان بلوں کو حکومت نے زبردست ہنگامے کے دوران پاس کروا لیا۔ اس دوران ترنمول کانگریس اور عام آدمی پارٹی سیت کئی اپوزیشن جماعتوں نے وہیل میں آکر ہنگامہ کیا۔ کچھ اراکین پارلیمنٹ نے ڈپٹی چیئرمین کی چیئر کے سامنے پہنچ کر بل کا کاپیاں پھاڑ دیں اور ڈپٹی چیئرمین کے مائیک کو بھی پکڑ کر اسے اکھاڑنے کی کوشش کی۔ ان سب کی ویڈیو ریکارڈنگ وزارت پارلیمانی امور کے پاس ہے۔ آج راجیہ سبھا میں تیسرا کسان بل رکھا جائے گا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!