Published From Aurangabad & Buldhana

کرناٹک انتخابات: اوپینین پول میں کانگریس کنگ،اقتدار کی کنجی جے ڈی ایس کے ہاتھ میں

میسور: کرناٹک میں 12 مئی کو ہونے والےاسمبلی انتخابات کو لے کر ہوئے تازہ اوپینین پول کے مطابق کسی بھی پارٹی کو اکثریت نہیں ملنے جارہا ہے۔ اے بی پی نیوز کے لئے لوک نیتی سی ایس ڈی ایس کی طرف سے کئے گئے سروے کے مطابق کرناٹک میں برسراقتدار کانگریس سب سے بڑی جماعت بن کر ابھر رہی ہے۔

اوپینین پول کے مطابق کانگریس کو 38 فیصد ووٹ ملیں گے جبکہ 33 فیصد ووٹوں کے ساتھ بی جے پی دوسرے نمبر پر رہے گی، وہیں جنتا دل (سیکولر) کو 22 فیصدی ووٹ مل سکتے ہیں۔ اوپینین پول کے مطابق کسی بھی پارٹی کو اکثریت کے لئے ضروری 112 سیٹیں نہیں ملیں گی۔

اس سروے میں شامل 38 فیصد لوگ مانتے ہیں کہ ریاست میں ترقی کرنے کے لئے کانگریس بہتر ہے۔ اس ضمن میں بی جے پی کو 32 فیصد لوگوں نے پسند کیا ہے اور 24 فیصد لوگ جے ڈی ایس کے ساتھ ہے۔

سروے میں شامل 23 فیصد لوگوں نے کہا کہ وزیراعظم مودی کا کام کاج بہت اچھا اور 45 فیصد لوگوں نے اسے اچھا بتایا۔ اس طرح سے وزیراعظم مودی کے کام کاج کو تقریباً 68 فیصد لوگوں نے اچھا بتایا ہے۔ وہیں 72 فیصد لوگوں نے سدارمیا کے کام کاج کی تعریف کی ہے۔ پول میں 44 فیصد لوگوں نے کہا کہ بی جے پی سب سے بدعنوان پارٹی ہے جبکہ کانگریس کو 41 اور جے ڈی ایس کو 4 فیصد لوگوں نے بدعنوان قرار دیا ہے۔

اس سے قبل انڈیا ٹوڈے کے اوپینین پول میں اندازہ لگایا گیا تھا کہ بی جے پی کاووٹ شیئر بڑھنے کا امکان ہے، لیکن سرکار کانگریس کی ہی بنے گی۔ سروے کے مطابق کانگریس 101-90 سیٹوں کے ساتھ اپنا ووٹ شیئر برقرار رکھے گی۔ بی جے پی کو 86-78 سیٹیں مل سکتی ہیں جبکہ جے ڈی ایس کو 43-34 سیٹیں ملنے کا امکان ہے۔ واضح رہے کہ کرناٹک میں 12 مئی کو انتخابات ہوں گے اور 15 مئی کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!