Published From Aurangabad & Buldhana

کرناٹک:راہل کی ’جن آشرواد ‘ یاترا میں امڈا ہزاروں لوگوں کا سیلاب

کرناٹک۔ آل انڈیا نیشنل کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے اپنی انتخابی مہم ’ جن آشرواد‘ یاترا کے تیسرے دن دوشنبہ کی شروعات حیدرآباد ۔ کرناٹک علاقہ کی مشہور شمس آباد درگاہ پر حاضری دے کر کی۔راہل گاندھی نے ان دلت تنظیموں کے ساتھ بھی اتوار کو تبادلہ خیال کیا جنہوں نے گنگاوتی میں کالے جھنڈے دکھا کر داخلی ریزرویشن کے تعلق سے سدشیوا کمیشن کی رپورٹ کو نافذ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔
راہل گاندھی نے سرگرم دلت کارکنوں کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ان کے مطالبہ پر جلد ہی غور کیا جائے گا نیز انہوں نے وزیر اعلی سدرا میا سے کہا کہ اس سلسلے میں مرکزی قیادت کو رپورٹ بھیجیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس معاملہ کو خود دیکھیں گے۔

راہل گاندھی نے درگاہ پر چادر چڑھائی اور دعا مانگی۔ اس کے علاوہ انہوں نے کچھ مذہبی رہنماوں سے درگاہ پر ملاقات بھی کی۔
اپنی مختصر مگر تیز وتند تقریر میں وزیر اعظم مودی کو نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’ انہیں ماضی کے بارے میں تقریریں اب بند کردینی چایئے اور کام کا آغاز کرنا چاہیئے کیونکہ اب ان کے عہدے کی میعاد ختم ہونے میں زیادہ وقت نہیں بچا ہے‘۔
راہل گاندھی نے کہا کہ کانگریس پارٹی سیکولرزم میں یقین رکھتی ہے اور کرناٹک میں سدرامیا حکومت نے نہ صرف اقلیتوں کے لئے بہت کچھ کیا ہے بلکہ غریب کسانوں اور عام آدمی کے لئے بھی بہت کام کئے ہیں۔ چاہے اندرا کینٹین ہو یا کسانوں کے قرض معافی کی بات ہو، کانگریس کی مرکزی حکومت نے بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت سے بہت زیادہ کام کیا ہے۔
میٹنگ کے بعد راہل گاندھی نے یرمرا علاقہ کے گنجہ سے کل مل اور گوبور گاؤں ہوتے ہوئے روڈ شو اور اسٹریٹ میٹنگ بھی کی۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!