Published From Aurangabad & Buldhana

ڈنمارک میں حجاب پہننے پر دینا ہو گا دس ہزار روپئے کا جرمانہ

ڈنمارک میں عوامی مقامات پر چہرہ ڈھکنے والے نقاب یا حجاب پر یکم اگست سے پابندی کے بعد پہلی بار 28 سالہ ایک عورت پر اس قانون کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔

ڈنمارک میں عوامی مقامات پر چہرہ ڈھکنے والے نقاب یا حجاب پر یکم اگست سے پابندی کے بعد پہلی بار 28 سالہ ایک عورت پر اس قانون کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ یہ جانکاری میڈیا کی رپورٹ میں ملی ہے۔ پولیس ڈیوٹی افسر ڈیوڈ بوركیرسن نے رتجاو نیوز ایجنسی کو بتایا کہ پولیس کو ہورشولم کے ایک شاپنگ سینٹر میں بلایا گیا تھا۔ یہاں کل ایک خاتون کا نقاب ایک دوسری خاتون نے پھاڑنے کی کوشش کی جس کے بعد ان کے بیچ جھگڑا ہو گیا۔

بوركیرسن نے کہا، "جھگڑے کے دوران خاتون کا نقاب اتر گیا تھا لیکن جب تک ہم پہنچے، اس نے دوبارہ نقاب پہن لیا تھا۔” پولیس نے نقاب پہنی عورت کی تصویر لی اور شاپنگ سینٹر سے سیکورٹی کیمرہ فوٹیج نکالا۔ اس کے بعد نقاب پہنے ہوئی عورت پر 1،000 كرنر (تقریبا 10 ہزار روپے) جرمانہ لگایا گیا۔ اس کے بعد اسے عوامی مقام چھوڑ کر جانے یا نقاب ہٹانے کو کہا گیا تو اس نے عوامی مقام چھوڑ کر جانا پسند کیا۔

یہاں یکم اگست سے یہ ضابطہ بنایا گیا ہے کہ پورے چہرہ کو ڈھکنے والا برقع یا صرف آنکھ نظر آنے والا نقاب عوامی مقامات پر پہننے پر تقریبا ایک ہزار کرنر کا جرمانہ ادا کرنا ہو گا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!