Published From Aurangabad & Buldhana

چیف سکریٹری کے ساتھ بدسلوکی معاملے نے پکڑا طول،ایف آئی آر درج

نئی دہلی۔دہلی کی ا روند کیجریوال حکومت ایک بار پھر تنازع میں گھرتی نظر آ رہی ہے۔دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کا الزام ہیکہ پیر کو دیر شام وزیر اعلی اروند کیجریوال کی رہائش گاہ پر ہوئی ایک میٹنگ کے دوران عآپ ارکان اسمبلی نے ان کے ساتھ بد تمیزی کی۔چیف سکریٹری نے لیفٹیننٹ گورنرانل بیجل سے اس معاملے کو لیکر ملاقات کی اور عآپ کے دو ارکان اسمبلی اجئے دت اور پرکاش جھاروال کے خلاف شکایت درج کرائی۔ان کا الزام ہیکہ سی ایم کیجریوال کے سامنے ہی ان کے ساتھ مار پیٹ کی گئی۔

وہیں عآپ ارکان اسمبلی پرکاش جھاروال نے چیف سکریٹری پر گالی۔گلوچ کرنے کا الزام لگایا ہے۔عآپ لیڈر اشیش کھیتان نے الزام لگایا کہ سیکرٹریٹ میں لوگوں نے ان سے مارپیٹ کی ہے۔انہوں نے بتایا ہیکہ بھیڑ نے عمران حسین کو بھی گھیر لیا تھا۔سکریٹریٹ میں لگاتار "مارو۔مارو”کے نعرے لگائے جا رہے تھے۔اشیش کھیتان نے دہلی پولیس کو بھی فون کر کے اس کی شکایت کی۔جس کے بعد موقع پر آئی پولیس نے معاملے کو پر امن کرایا ۔
وہیں عآپ لیڈر سوربھ بھاردواج نے بتای کہ آج لوگ سکریٹریٹ میں گھس گئے،مارپیٹ کی جا رہی ہے۔بی جے پی زندہ باد کے نعرے لگا رہے ہیں۔یہ ساری چیزیں یہی اشارہ کرتی ہیں کہ سب پلاننگ کے تحت ہے۔
دہلی کے آئی ائ ایس ایسو سی ایشن نے عآپ ارکان اسمبلی کے خلاف سکت کارروائی کی مانگ کرتے ہوئے سارا کام روکنے کاعلان کیا ہے۔ ڈی اے ایس ایس کے صدر ڈی این سنگھ نے کہا "ہم ہڑتال پر جا رہے ہیں،جب مجرموں کو گرفتار نہیں کیا جات،ہم کام پر نہیں لوٹیں گے”۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا ہم نے ایل جی نے قصورواروں کے کلاف کارروائی کی گزارش کی ہے۔یہ ایک قانونی بحران جیسا ہے۔میں نے اپنے اتنے سالوں کے کیرئر میں ایسا کچھ نہیں دیکھا۔

ریاستی وزیر کرن رجیجو نے نے سوال پوچھا ہیکہ جب چیف سکریٹری کے ساتھ ایسا سلوکر سکتے ہیں تو دیگر سرکاری اسٹاف کی سالمتی کی کیا گارنٹی ہے؟

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!