Published From Aurangabad & Buldhana

چھاؤنی پینشن پورہ کے شیر خان کا بہیمانہ قتل

اورنگ آباد: ۲۸؍ دسمبر ( اسٹاف رپورٹر ) پلاٹنگ کاروباری وہوٹل مالک حسین خان علی یارخان عرف شیرخان (۵۵) ساکن پنشن پورہ چھاؤنی کاکل رات دوبجے کے درمیان بہیمانہ قتل کردیاگیا۔اطلاعات کے مطابق شیرخان جب موٹرسائیکل کے ذریعہ اپنے گھر لوٹ رہے تھی اسی دوران کچھ نامعلوم افرادنے عقب سے ان کے سرپر آہنی راڈ سے حملہ کردیا۔ اس حملہ کے سبب ان کے سرپر شدیدچوٹیں آئیں تھیں جس کے بعدانہیں علاج کیلئے گھاٹی اسپتال لے جایاگیا۔ جہاں جانچ کے بعد ڈاکٹرس نے انہیں مردہ قراردیا۔یہ واقعہ چھاؤنی ولکشمی کالونی کے درمیان واقع اجنتابھون کے قریب پیش آیا۔ پولس کامانناہے کہ دیرینہ رنجش یاپلاٹنگ کے کاروبارمیں مخاصمت کے سبب یہ قتل کیاگیاہے۔چھاؤنی پولس انسپکٹر آئی ایم بہورے نے بتایاکہ حالانکہ شیرخان کااصل نام حسین خان علی یارخان ہے لیکن وہ شیرخان کے نام سے مشہورتھے۔ وہ گزشتہ کئی سالوں سے ہوٹل و پلاٹنگ کے کاروبارکرتے تھے۔ جس کے سبب ان کی کئی افراد سے رنجش تھی۔ موتی کارنجہ علاقہ میں ایک ہوٹل میں رک کردیڑھ بجے انہوں نے اپنے دوستوں کے ہمراہ گپ شپ کی اوراسکے بعدوہ چھاؤنی پنشن پورہ میں اپنے گھرلوٹ رہے تھے۔ حملہ اتناشدیدتھاکہ وہ موٹرسائیکل سے نیچے گرپڑے۔اسکے بعدحملہ آوروں نے ان کے جسم اورسرپر آہنی سلاخ سے پے درپے وارکیے اوروہاں سے فرارہوگئے۔شب سوادوبجے کے درمیان وہاں سے گزررہے کچھ لوگوں نے پولس کنٹرول روم کوحادثہ کی اطلاع دی۔ چھاؤنی پولس اورکنٹرول روم سے کرائم برانچ کادستہ موقع پر پہنچا۔تب شیرخان شدیدزخمی حالت میں بیہوش پڑے تھے۔ان کے قریب سے حملہ میں استعمال شدہ راڈ بھی برآمدہوئی۔ بہرحال بیہوشی کی حالت میں انہیں گھاٹی اسپتال لے جایاگیاجہاں ڈاکٹرس نے جانچ کے بعدانہیں مردہ قراردیا۔ چھاؤنی پولس نے اس ضمن میں معاملہ درج کرلیاہے مزیدتحقیقات جاری ہیں۔آج صبح اس معاملہ میں مقتول شیرخان کے فرزند انصارخان حسین خان (۲۱) نے چھاؤنی پولس اسٹیشن میں چار مشتبہ افرادکے خلاف اپنے والدکے قتل کی شکایت درج کروائی۔پولس نے اس معاملہ میں اطہرخان‘ جہانگیرخان ودیگر کوشبہ کی بنیادپر حراست میں لیا ہے۔پولس نے بتایاکہ مشتبہ گرفتارملزمین اورشیرخان کے کاروباری تعلقات تھے اوروہ ایکدوسرے کواچھی طرح جانتے تھے۔ پلاٹنگ کے کاروبارمیں یہ شیرخان کے ساتھ شریک تھے۔اس لئے پولس کوشک ہے کہ پلاٹنگ کاروبارمیں تنازعہ کے سبب ہی شیرخان کاقتل کیاگیاہے ۔گرفتار ملزمین کے خلاف تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے تحت معاملہ درج کیاگیاہے ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!