Published From Aurangabad & Buldhana

پربھنی مجلسِ بلدیہ عظمیٰ میں 591کروڑ کے سالانہ تخمینہ کو منظوری

پربھنی: (سیّدیوسف) پربھنی مجلسِ بلدیہ عظمیٰ میں اقتصادی 2018-19 کیلئے 591کروڑ 10لاکھ روپے کے سالانہ تخمینہ کو جنرل باڈی میٹنگ میں منظوری دے دی گئی ہے۔ اس موقع پردرمیان میں بلدیہ عظمیٰ کے اراکین نے بھی تجاویز پیش کیں۔ سالانہ اقتصادی بل کیلئے بی رگھوناتھ ہال میں جنرل باڈی میٹنگ منعقد ہوئی۔ قبل ازیں منگل کے روز بتاریخ 27مارچ کے روز اسٹینڈنگ کمیٹی کی میٹنگ میں 2017-18 کی اصلاح شدہ اور 2018-19 کے اقتصادی منصوبہ کے سالانہ تخمینہ کا بجٹ پیش کیا گیا۔ اسٹینڈنگ کمیٹی کی تجاویز اقتصادی منصوبہ میں دُرستگی کر کے سالانہ تخمینہ بجٹ منظوری کیلئے جنرل باڈی میٹنگ میں پیش کیا گیا۔ مےئر میناتائی ورپوڑکر، کمشنر راہل ریکھاوار، ڈپٹی مےئر سیّدسمیع عرف ماجو لالہ، سکریٹری وِکاس رتن پارکھے، بھگوان واگھمارے، اپوزیشن لیڈر وجئے جامکر، اسٹینڈنگ کمیٹی کے چےئرمین گنیش دیشمکھ، گٹ نیتا قاضی جلال الدین، بالا صاحب بُلبلے، معراج قریشی، ایڈوکیٹ وِشنو نوے پاٹل، نازنین پٹھان، ڈاکٹر ودیاپاٹل، سیّدمحبوب علی پاشاہ، جان محمد جانو، سیّدعمران، شیخ فہد، سنیل دیشمکھ کی موجودگی میں سالانہ تخمینہ کو منظوری دی گئی۔ جنرل باڈی میٹنگ میں 2017-18 سال کے 292کروڑ 65لاکھ اسی طرح 2018-19 کیلئے 591 کروڑ 4 لاکھ 4 ہزار 567روپے رقم پیش کی گئی۔ جس میں سے 4سوکروڑ 95لاکھ 23ہزار روپے خرچ درکار ہیں۔ جن میں سے 190کروڑ 8لاکھ 81ہزار 567روپے باقی رہیں گے۔ مذکوہر اقتصادی بجٹ کو جنرل باڈی کے اِجلاس میں منظوری دی گئی۔ مجلسِ بلدےۂ عظمیٰ پر مختلف ذرائع کے 76کروڑ روپے کا قرض باقی ہے جبکہ بجلی بورڈ میں اسٹریٹ لائٹ کیلئے بجلی بل بھرنا بھی ابھی باقی ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!