Published From Aurangabad & Buldhana

پاکستان LIVE: لاہور ائیر پورٹ پر طیارہ اترا، نواز شریف جلد ہوں گے گرفتار

09.33 PM
نواز شریف اپنی بیٹی کے ساتھ جلد طیارہ سے نیچے اتریں گے
نواز شریف اور مریم نواز اس وقت بھی طیارہ میں سوار ہیں۔ امید کی جا رہی ہے کہ جلد ہی وہ دونوں طیارہ سے نیچے اتریں گے اور نیب کی ٹیم انھیں گرفتار کرے گی۔

09.33 PM
نواز شریف اور ان کی بیٹی کی گرفتاری جلد، طیارہ کی لینڈنگ
پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز کو لے کر ابوظہبی سے آیا مسافر طیارہ لاہور ائیر پورٹ پر لینڈنگ کر چکا ہے۔ یہاں نیب کی ٹیم موجود ہے جو انھیں فوری طور پر گرفتار کرنے کے لیے سبھی تیاریاں مکمل کر چکی ہے۔ ابوظہبی سے لاہور آنے والا یہ مسافر طیارہ اپنے مقررہ وقت سے تقریباً ڈھائی گھنٹہ تاخیر رہا۔

09.12 PM
نواز شریف اسلام آباد نہیں لاہور ائیر پورٹ پر ہی اتریں گے
طیارہ کا رخ نیو اسلام آباد ائیر پورٹ کی طرف کیے جانے کی خبروں کے بعد تازہ صورت حال یہ ہے کہ ایک بار پھر طیارہ کو لاہور میں ہی اتارنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ طیارہ لاہور کی طرف بڑھ رہا ہے اور وہاں ائیر پورٹ پر سیکورٹی کے سخت انتظامات پہلے سے ہی کیے جا چکے ہیں۔ خبروں کے مطابق نیو اسلام آباد ائیر پورٹ پر کسی وجہ سے طیارہ کو لینڈنگ کی اجازت نہیں مل سکی جس کے سبب ایک بار پھر لاہور ائیر پورٹ پر ہی طیارہ کو اتارا جائے گا۔ مختلف میڈیا چینلوں پر نشر کی جا رہی خبروں کے مطابق ائیر پورٹ پر نواز شریف کے حامی لگاتار نعرے بازی کر رہے ہیں۔

09.07 PM
نواز اور مریم نواز کے طبی معائنہ کے لیے ڈاکٹرس اڈیالہ جیل میں موجود
خبروں کے مطابق نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز کو جب گرفتار کر کے اڈیالہ جیل لے جایا جائے گا تو وہاں ان کا طبی معائنہ ہوگا۔ اس طبی معائنہ کے لیے ڈاکٹروں کی ٹیم اڈیالہ جیل پہنچ چکی ہے۔ جیل قریب سیکورٹی کے سخت انتظامات بھی کیے گئے ہیں۔

08.30 PM
نواز شریف کو لاہور لے جا رہے طیارہ نے اسلام آباد کا رخ کیا
لاہور ائیر پورٹ پر نواز شریف اور ان کی بیٹی کو گرفتار کرنے کی تیاریاں ہو چکی تھیں لیکن موصولہ اطلاعات کے مطابق ابو ظہبی سے پرواز بھرنے والے طیارہ نے لاہور کی جگہ اسلام آباد کا رخ کر لیا ہے۔ دراصل لاہور ائیر پورٹ پر نواز شریف کے حامیوں کی بڑی تعداد جمع ہو گئی ہے اس لیے انھیں اسلام آباد ائیر پورٹ پر اتارنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

08.19 PM
پاکستان مسلم لیگ (نواز) کے کئی سینئر لیڈران حراست میں
نواز شریف لاہور ائیر پورٹ پر پہنچے والے ہیں لیکن اس سے پہلے پنجاب پولس نے پاکستان مسلم لیگ (نواز) کے کئی سینئر لیڈروں کو حراست میں لینے کا آرڈر جاری کر دیا۔ اس حکم کے بعد کچھ لیڈروں کو حراست میں لیے جانے کی خبریں بھی موصول ہو رہی ہیں۔

07.42 PM
نواز شریف کی آمد سے پہلے لاہور ہوائی اڈہ پر حامیوں کی بھیڑ
پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی گرفتاری کی تیاریاں ہو چکی ہیں اور وہ جلد ہی لاہور ہوائی اڈہ پہنچنے والے ہیں۔ ان کی آمد سے قبل ان کے حامیوں کی بھیڑ ہوائی اڈہ پر پہنچ چکی ہے اور ان کی حمایت میں نعرے لگا رہی ہے۔

02.15 PM
میں بھی نواز شریف کے ساتھ جیل جاؤں گی: نواز شریف کی والدہ
نوازشریف کی عمر رسیدہ والدہ شمیم اختر نے اپنے بیٹے پر عائد الزامات کو جھوٹا قرار دیا ہے۔ والدہ کا کہنا ہے کہ ’’خود اپنے بیٹے کا استقبال کرنے لاہور ایئرپورٹ جاؤں گی اور نوازشریف کو گرفتار نہیں ہونے دوں گی تاہم اگر انہیں گرفتار کیا گیا تو میں بھی ان کے ساتھ جیل جاؤں گی۔‘‘شمیم اختر نے نواز شریف کی پارٹی کے کارکنان کے نام ویڈیو پیغام بھی جاری کیا ہے۔

12.18 PM
نواز شیرف اور مریم نواز ابو ظہبی سے لاہور کے لئے روانہ
پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف اپنی بیٹی کے ساتھ لندن سے پاکستان روانہ ہوئے تھے۔ پہلے وہ ابو ظہبی کے ایئرپورٹ پر اترے اور اس کے بعد لاہور کے لئے روانہ ہوگئے۔خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے مطابق ابوظہبی میں ان کے ساتھ نیشنل اکاؤنٹبلٹی بورڈ (نیب) کے افسران بھی طیارہ میں آئیں گے۔ انہیں لاہور ایئرپورٹ سے ہی گرفتار کر لیا جائے گا۔
لاہور میں نظم و نسق کی صورت حال سنبھالنے کے لئے 10 ہزار جوانوں کو تعینات کیا گیا ہے۔

ادھر تازہ اطلاعات میں نواز شریف کی پارٹی پاکستان مسلم لیگ ن کے کارکنان نے لاہور میں مظاہرہ شروع کر دیا ہے۔ پارٹی صدر اور نواز شریف کے بھائی شہباز شریف نے پارٹی کارکنان سے لاہور ایئرپورٹ پہنچنے کی کال دی ہوئی ہے۔ کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لئے لاور میں شام 3 بجے تک انٹر نیٹ خدمات کو معطل رکھا جائے گا۔

نواز شریف بیٹی کے ہمراہ ابوظہبی ایئرپورٹ پہنچے
نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز لندن سے پاکستان کے لئے روانہ ہوئے تھے اور وہ متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابو ظہبی کے ایئر پورٹ پر لینڈ کر چکے ہیں۔ یہاں سے انہیں لاہور پہنچنا ہے۔

بی بی سی کے مطابق جب طیارہ لینڈ کیا تو اطراف میں سخت سکیورٹی تھی اور وہاں موجود افراد کو تصاویر اور ویڈیو لینے سے منع کیا جا رہا تھا۔
انہوں نے کہا، ’’مجھے سیدھا جیل خانہ میں لے جائے گا۔ لیکن میں یہ قربانی پاکستانی عوام اور آنے والی نسلوں کے لئے دے رہا ہوں۔ ایسا موقع بار بار نہیں آتا۔ چلو پاکستان کا مستقبل بناتے ہیں۔‘‘اہوں نے پاکستانی قوم سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ ان کے ساتھ قدم سے قدم ملا کر اور ہاتھ میں ہاتھ ڈال کر چلیں اور ملک کی تقدیر بدلیں۔

09.11 AM
پاکسان کے سرکاری چینل پر نواز شریف کی خبر نشر کرنے پر پابندی
پاکستان کے سرکاری چینل پی ٹی وی پر نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز کے انٹرویو اور خبر دکھانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ پاکستان کے سرکاری چینل پی ٹی وی کی طرف سے حکم جاری کیا گیا ہے کہ کسی بھی ٹی وی پروگرام میں مجرم قرار پائے لوگوں کو نہ تو دکھایا جائے گا اور نہ ہی ان کا ذکر کیا جائے گا۔

08.42 AM
نواز شریف اور ان کی بیٹی لندن سے پاکستان کے لئے روانہ
پاکستان کے سپریم کورٹ سے سزا پائے پاکستان کے سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز لندن کے ہیتھرو ایئرپورٹ سے لاہور کے لیے روانہ ہو چکے ہیں۔ بی بی سی اردو کے مطابق نواز شریف اپنی بیٹی مریم نواز کے ساتھ اتحاد ایئر ویز کی پرواز کے ذریعے جمعے کی شام لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پہنچیں گے جہاں ان کی پارٹی پاکستان مسلم لیگ (ن ) نے ان کے استقبال کے لیے کارکنان کو لاہور آنے کی کال دے رکھی ہے۔
پاکستان کے تفتیشی ادارے نیشنل اکاؤنٹبلٹی بیورو (بیب) نے کہا ہے کہ ایئرپورٹ پر اترتے ہی نواز شریف کو گرفتار کر لیا جائے گا۔ دریں اثنا اطلاع ملی کہ اسلام آباد ایئرپورٹ پر لینڈ کرنے والی پروازوں کو لاہور کی طرف ڈائورٹ کیا جا رہا ہے۔

نواز شریف کی واپسی کا سفر شروع ہونے سے چند گھنٹے قبل پاکستان مسلم لیگ (ن) کے موجودہ صدر اور نواز شرف کے بھائی شہباز شریف نے کہا ہے کہ نواز شریف کی وطن آمد سے قبل ان کی جماعت کے سینکڑوں کارکنوں کو گرفتار کیا جا رہا ہے تاکہ انتخاب میں دھاندلی کی جا سکے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!