Published From Aurangabad & Buldhana

ٹرمپ کی ہندوستان کو دھمکی ، امریکی مصنوعات پر چھوٹ دیں ، نہیں تو ہم بھی وصول کریں گے مساوی ٹیکس

واشنگٹن : امریکہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے جمعہ کو دھمکی دی ہے کہ اگر چین اور ہندوستان جیسے ممالک نے امریکہ کے مطابق ڈیوٹی میں رعایت نہیں دی تو ان کا ملک بھی ان پر جوابی ٹیکس عائد کرے گا ۔ حالیہ دنوں میں ٹرمپ نے کئی مرتبہ ہندوستان کے ذریعہ درآمد کی جانے والی مہنگی موٹر سائیکل ہارلے ڈیوڈسن پر تقریبا 50 فیصد ڈیوٹی عائد کرنے کا سوال اٹھایا ہے ۔ انہوں نے بار بار زور دیا کہ امریکہ ہندوستان سے درآمد کی جانے والی موٹر سائیکل پر صفر ڈیوٹی عائد کرتا ہے۔

ٹرمپ نے کہا کہ ہم کسی نہ کسی وقت جوابی ٹیکس اسکیم اختیار کریں گے ۔ چین ہم پر 25 فیصد ٹیکس لگاتا ہے یا ہندوستان 75 فیصد ڈیوٹی لگاتا ہے اور ہم ان پر کوئی ٹیکس نہیں لگاتے ہیں ۔ انہوں نے اسٹیل پر 25 فیصد اور المونیم پر 10 فیصد درآمد ڈیوٹی لگائی ہے۔

امریکی صدر نے کہا کہ اگر وہ 50 فیصد یا 75 فیصد یا پھر 25 فیصد ٹیکس لگاتے ہیں ، ہم بھی اتنا ہی ٹیکس لگائیں گے ۔ اسے جوابی ٹیکس کہتے ہیں ۔ یہ تو آئینہ ہے جس میں ٹھپے چھلکتے ہیں ۔ اس طرح سے وہ ہم پر 50 فیصد ڈیوٹی لگاتے ہیں تو ہم بھی ان پر 50 فیصد ڈیوٹی لگائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ان کے اقتدار کے پہلے سال میں ہی جوابی ٹیکس کا اسٹیج تیار ہوگیا تھا۔ ٹرمپ نے کہا کہ امریکی کمپنیوں کے ساتھ دیگر ممالک غیرجانب دار رویہ اختیار نہیں کرتے ہیں ۔ انہوں نے ٹیسلا کے سربراہ ایلن ماسک کے ٹویٹ کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ چین امریکی کاروں پر 25 فیصد ڈیوٹی عائد کرتا ہے جبکہ درآمد چینی کاروں پر ہم صرف 2.5 فیصد ڈیوٹی لگاتے ہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!