Published From Aurangabad & Buldhana

وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کے گھر پر دہلی کے چیف سکریٹری کے ساتھ بدسلوکی

نئی دہلی۔ دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ وزیر اعلی اروند کیجریوال کے گھر پر مبینہ طور پر بدسلوكي کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ میڈیا رپورٹوں کے مطابق مسٹر پرکاش کے ساتھ مبینہ طور پر یہ بدسلوکی مسٹر کیجریوال کی موجودگی میں ان کی سرکاری رہائش گاہ پر دیر رات دو پارٹی ممبران اسمبلی نے کی۔
چیف سیکریٹری انشو پرکاش نے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل سے اس معاملے کو لے کر ملاقات کی اور عام آدمی پارٹی کے دو ارکان اسمبلی اجے دت اور پرکاش جھاروال کے خلاف شکایت درج کرائی۔ ان کا الزام ہے کہ وزیراعلی اروند کیجریوال کے سامنے ہی ان کے ساتھ بدتمیزی کی گئی۔

وہیں، اس معاملہ سے ناراض دلی کے آئی اے ایس ایسوسی ایشن نے عآپ ارکان اسمبلی کے خلاف سخت کارروائی کی مانگ کرتے ہوئے ہڑتال پر جانے کا اعلان کیا ہے۔ ایسوسی ایشن کے صدر ڈی این سنگھ نے کہا، "ہم فوری طور پر ہڑتال پر جا رہے ہیں۔ جب تک قصور واروں کو گرفتار نہیں کر لیا جاتا، ہم کام پر واپس نہیں آئیں گے۔ ‘ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ ہم نے ایل جی سے قصورواروں کے خلاف کارروائی کی گزارش کی ہے۔ یہ ایک آئینی بحران ہے۔ میں نے اپنے اتنے سالوں کے کیریئر میں ایسا کچھ بھی نہیں دیکھا ہے۔
کیجریوال حکومت کی صفائی
حالانکہ وزیر اعلی کے دفتر نے ان الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایسا کوئی واقعہ پیش ہی نہیں آیا۔ کیجریوال کے دفتر کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ "دلی وزیراعلی کا دفتر چیف سکریٹری کے ان الزامات کو مکمل طور پر مسترد کرتا ہے۔ یہ کوئی دھکامکی یا پھر ایسی کوئی کوشش ہوئی ہی نہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!