Published From Aurangabad & Buldhana

والمارٹ ۔ فلپ کارٹ معاہدہ سے حکومت کو 10000کروڑ روپئے کا ٹیکس موصول

نئی دہلی: امریکی ریٹیل کمپنی والمارٹ کی جانب سے ہندوستان کی بڑی آن لائن خریداری کمپنی فلپ کارٹ کے شیئرس 16بلین ڈالر (1لاکھ کروڑروپئے سے اوپر) میں خریدنے کی وجہ سے حکومت کو 10ہزار کروڑ روپئے کا ٹیکس موصول ہوا ہے۔ اس طرح کی رپورٹ انگریزی اخبار ٹائمز آف انڈیا نے دی۔

واضح ہوکہ اس تجارتی سودہ کے بعد ٹیکس کو لیکر سوال اٹھا تھا اب وہ ختم ہوتا نظر آرہا ہے۔ ٹیکس کی یہ رقم اس 14بلین کے سودہ کی بنیاد پر نکل کر سامنے آئی ہے۔ حالانکہ اس امریکی کمپنی کی جانب سے حکومت کوٹیکس ادائیگی کا جواب ہاں میں آچکا تھا لیکن رقم نہیں بتائی گئی تھی۔والمارٹ کے ترجمان نے اس موقع پر کہا کہ’’ ہم اپنی قانونی ذمہ داریوں کو سنجیدگی سے نبھاتے ہیں پھرچاہے وہ ٹیکس ہی بھرنا ہو۔فلپ کارٹ میں ہماری سرمایہ کاری سے متعلق ہم نے ہندوستانی حکومت کو ٹیکس ادا کردیا ہے‘‘۔

واضح ہوکہ والمارٹ۔ فلپ کارٹ کے سودہ سے ہی یہ معاملہ حکومت کی نظر میں تھا اور اس سے متعلق ٹیکس پر سوال اٹھ رہے تھے۔پچھلے مہینے ہی ہندوستانی انتظامیہ کی جانب سے والمارٹ کو فلپ کارٹ کے شئیرس کے سودہ کو مکمل کرنے کی اجازت مل گئی تھی۔ جس میں والمارٹ نے فلپ کارٹ کے 77فیصد شیئرس خرید لیے ہیں جو کہ اس کی جانب سے اب تک کا سب سے بڑا سودہ ہے۔

والمارٹ کا یہ فیصلہ اس لئے بھی کیا گیا ہے کہ ہندوستان میں اگلے دس سالوں میں اس میدان میں تجارت میں تقریباً 200بلین ڈالر کا اضافہ ہونے کی امید ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!