Published From Aurangabad & Buldhana

نیوزی لینڈ نے پہلی اننگ میں 348رن بنائے ،جواب میں ٹیم انڈیا نے 4وکٹ 144رن بنائے

تیز گیندباز ایشانت شرما کے پانچ وکٹ لینے کے باوجود دنیا کی نمبر ایک ٹیم ہندوستان، میزبان نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے کرکٹ ٹیسٹ کے تیسرے دن اتوار کے روز سخت مشکل سے دوچار ہوگئی ہے۔ ہندوستان نے اپنی دوسری اننگز میں اپنے چار وکٹ 144 رن پر گنوا دیئے ہیں اور وہ نیوزی لینڈ کی برتری سے 39 رن پیچھے ہے ۔ ٹیم انڈیا کی امیدیں اب ناٹ آؤٹ بلے بازوں نائب کپتان اجنکیا رہانے اور ہنوما وہاری پر ٹکی ہیں۔ ہندوستان نے اپنی پہلی اننگز میں 165 رن بنائے جبکہ نیوزی لینڈ نے پانچ وکٹ پر 216 رن سے آگے کھیلتے ہوئے پہلی اننگز میں 348 رن بنا کر 183 رن کی اہم برتری حاصل کر لی ۔ دوسری اننگز میں بھی ہندوستانی بلے بازوں نے مایوس کن مظاہرہ کیا اور اسٹمپ تک اپنے چار وکٹ گنوا دیے۔

پرتھوی شا 14، چتیشور پجارا 11، مینک اگروال 58 اور کپتان وراٹ کوہلی 19 رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔ اسٹمپ پر نائب کپتان اجنکیا رہانے 25 اور ہنوما وہاری 15 رن بنا کر کریز پرموجود تھے۔ ان دونوں بلے بازوں کو چوتھے دن ہندوستانی اننگز کو سنبھالنا ہوگا ، تبھی ہندوستان کے لئے کچھ امیدیں بن پائیں گی ۔ بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز ٹرینٹ بولٹ نے 27 رن پر تین وکٹ لے کر ہندوستانی اننگز کوہلاکر رکھ دیا۔

اس سے پہلے بي جے واٹلنگ نے 14 اور کالن ڈی گریڈهوم نے چار رن سے صبح اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔ گرینڈهوم نے 43، پہلا ٹسٹ کھیل رہے کائل جیمیسن نے 44 اور آخری بلے باز بولٹ نے 38 رن بنائے۔ کیوی اننگز 348 رن کے مضبوط اسکور پر ختم ہوئی۔ ایشانت نے 68 رن پر پانچ وکٹ اور آف اسپنر روی چندرن نے 99 رن پر تین وکٹ لئے جبکہ جسپريت بمراه اور محمد سمیع کو ایک ایک وکٹ ملا۔صبح ہندوستانی گیند باز کیوی اننگز کو جلدی نہیں سمیٹ سکے ۔ جبکہ پہلی اننگز میں پچھڑنے کے باوجود ٹاپ ہندوستانی بلے بازوں نے وکٹ پر ٹکنے کا جذبہ نہیں دکھایا۔ کپتان وراٹ کوہلی نے سب سے زیادہ مایوس کیا۔ اس دورے میں فارم حاصل کرنے متلاشی وراٹ پہلی اننگز میں سات گیندوں میں دو رن بنا پائے تھے جبکہ دوسری اننگز میں 43 گیندوں میں تین چوکوں کی مدد سے 19 رن ہی بنا سکے۔

ہندوستان کی شروعات دوسری اننگز میں بھی خراب رہی۔ پرتھوی شا 30 گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 14 رن بنا کر بولٹ کا شکار بن گئے۔ پرتھوی نے پہلی اننگز میں 16 رن بنائے تھے اور دوسری اننگز میں بھی انہوں نے مایوس کیا۔ ہندوستان کا پہلا وکٹ 27 کے اسکور پر گرا۔ مینک اگروال اور پجارا نے دوسرے وکٹ کے لئے 51 رن کی ساجھیداری کی لیکن اس کے بعد ہندوستان نے 35 رن کے وقفے میں تین وکٹ گنوائے اور وہ سخت مشکل میں پھنس گیا۔ بولٹ نے پجارا کو بولڈ کیا اور ہندوستان کا دوسرا وکٹ 78 کے اسکور پر گر گیا۔ پجارا نے 81 گیندیں کھیل کر 11 رن بنائے۔ مینک جم کر کھیل رہے تھے اور اپنی نصف سنچری مکمل کر چکے تھے ، لیکن ٹم ساؤتھی نے مینک کو وکٹ کیپر بی جے واٹلنگ کے ہاتھوں کیچ کراکر ہندوستان کو تیسرا جھٹکا دے دیا۔ مینک کا وکٹ 96 کے اسکور پر گرا۔ مینک نے 99 گیندوں پر 58 رن کی شاندار اننگز میں سات چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

ہندوستان کو اپنے کپتان وراٹ سے کافی امیدیں تھیں کہ وہ ٹیم کو بحران سے باہر نکالیں گے ، لیکن وراٹ ٹیم کو مشکل میں چھوڑ کر پویلین لوٹ گئے۔ وراٹ پہلی اننگز میں سلپ میں کیچ ہوگئے تھے اور اس بار بولٹ کی گیند پر انہوں نے وکٹ کیپر کو کیچ دے دیا ۔ وراٹ کا وکٹ 113 کے اسکور پر گرا۔ وراٹ کا آؤٹ ہونے سے ٹیم کو بڑا دھچکا تھا۔ رہانے اور ہنوما نے اس کے بعد 118 گیندوں پر 31 رن کی ناٹ آؤٹ ساجھیداری کرکے ٹیم کو سنبھالے رکھا ۔ اسٹمپ تک رہانے 67 گیندوں میں چار چوکوں کی مدد سے 25 اور ہنوما 70 گیندوں میں دو چوکوں کے ساتھ 15 رن بنا کر کریز پر موجود تھے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!