Published From Aurangabad & Buldhana

مہارشٹر: کئی شہروں میں سماجی کارکنوں اور صحافیوں کے ٹھکانوں پر چھاپے

منگل کی صبح ملک کے کئی شہروں میں پونے پولس نے سماجی کارکنان، مصنفین اور وکلاء کے ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کی، ذرائع کے مطابق یہ چھاپہ ماری بھیما کورے گاؤں معاملہ میں کی جا رہی ہے۔

مہارشٹر کی پونے پولس نے اختلاف کی آواز دبانے کے لئے کارروائی کرتے ہوئے منگل کی صبح ملک کے کئی شہروں میں مصنفین، مفکرین، سماجی کارکنان اور وکلا کے گھروں اور دفاتر میں چھاپہ مارے ہیں۔پولس ذرائع کے مطابق یہ چھاپہ ماری بھیمار کورے گاؤں معاملہ میں کی جا رہی ہے۔

جن لوگوں کے خلاف چھاپہ ماری کی گئی ہے ان میں حیدرآباد میں رہ رہے انقلابی مصنف اور ماؤ نواز مفکر ورور راؤ، ممبئی کے سماجی کارکن ورنان گونجالوس، رون پریرا، چھتیس گڑھ میں سدھا بھاردواج اور صحافی اور سماجی کارکن گوتم نولکھا شامل ہیں۔

انڈین ایکسپریس کی خبر کے مطابق پولس افسران کا کہنا ہے کہ اس سال جون میں گرفتار کئے گئے 5 افراد سے پوچھ گچھ میں جن لوگوں کے نام سامنے آئے ان کے خلاف چھاپہ ماری انجام دی جا رہی ہے۔ پولس کا دعوی ہے کہ 31 دسمبر 2017 کو ایلگر پریشد میں ان لوگوں کے تقاریر کے بعد تشدد کی آگ بھڑکی تھی۔ یہ تقریب بھیما کورے گاؤں لڑائی کی 200 ویں جینتی کے موقع پر منعقد کی گئی تھی۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!