Published From Aurangabad & Buldhana

مہاراشٹر:دیہی اسپتال میں کام کرنے والے ڈاکٹروں کو 3لاکھ روپئے سالانہ تنخواہ کا آفر: فرنویس

ممبئی:۔ دیہی اسپتالوں میں ڈاکٹروں کی خدمات کو بڑھاوا دینے کے لئے ریاستی حکومت نے طئے کیا ہے کہ وہ ان ڈاکٹروں کو پیسہ بڑھاکر دیگی اور اس اعلان کے مثبت نتائج دیکھنے کو مل رہے ہیں۔
اس اسکیم کا اعلان ہوکر چونکہ چھ ماہ گزرچکے ہیں حکومت نے اب تک 356ماہرین کو مقرر کیا ہے۔ان میں تقریباً 12ماہرامراض نسواں اور تحزیرکار ہیں جنکو بات چیت کر حکومت نے 3لاکھ روپئے سالانہ تنخواہ دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس کوشش میں یہ ڈاکٹر بیڑ، رائے گڑھ، ایوت محل اور چندراپور اضلاع میں اپنی خدمات انجام دینگے۔

ریاستی حکومت کی اسکیم کے مطابق آدیواسی اور ماؤوادی متاثر علاقوں میں حکومت نے ڈاکٹر کو اپنی تنخواہ بات چیت کے ذریعہ 3لاکھ روپئے تک طئے کرنے کا موقع دیا ہے۔دیہی علاقوں کے لئے ماہانہ تنخواہ طئے شدہ ہے لیکن انہیں اضافی ترغیبی پیسہ دیاجائیگا جیسے ماہر امراض نسواں کو آپریشن کے ذریعہ زچگی کرنے پر 4000روپئے، 1500روپئے عمومی زچگی وغیرہ جیسی ترغیبات شامل ہیں۔

اس اسکیم کے بعد جو تبدیلی آئی ہے اس کا جائزہ اگر لیا جائے تو پچھلے سال اکتوبر تک ریاست میں تحزیر کار کی 648عہدوں میں سے 64فیصد، ماہر امراض اطفال کی 561نشستوں میں سے 35فیصد اور ماہر امراض نسواں کی 612نشستوں میں سے 26فیصد خالی تھیں۔ دسمبر 2017میں اس اسکیم کے تحت 142ماہر امراض نسواں، 143ماہر تحزیر کار اور 71ماہر امراض اطفال کا تقرر کیا گیا ہے۔ساتھ ہی صرف جون کے مہینے میں 4437آپریشن کے ذریعہ زچگی، 1021تحزیر کاری اور 2606اطفال کے ایمرجنسی معاملات آدیواسی و دیہی علاقوں میں دیکھے گئے ہیں۔
اس اسکیم کی کامیابی کے بعد ریاستی حکومت نے اس اسکیم کو دیگر میڈیکل شعبوں کے لئے بھی شروع کرنے کا ارادہ کیا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!