Published From Aurangabad & Buldhana

مودی حکومت کی مار، مہاراشٹر میں پٹرول 90 کے پار

روی شنکر پرساد کا یہ کہنا کہ حکومت پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں پر کچھ نہیں کر سکتی، اس کو لاچاری کہیں یا بے حسی۔ یہ بے حسی ہی ہے کیونکہ حکومت قیمتوں کو کم کرنے کے لئے کچھ نہیں کر رہی۔

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ مستقل جاری ہے اور آج کے اضافہ کے بعد پٹرول کی قیمت مہاراشٹر میں 90 روپے فی لیٹر کو پار کر گئی ہے اور اب وہاں ایک لیٹر پٹرول90.05 روپے کا مل رہا ہے جو ملک میں سب سے زیادہ ہے۔ ممبئی میں یہ قیمت14 پیسے بڑھ کر 88.26 روپے ہو گئی ہے جبکہ دہلی میں پٹرول کی قیمت 80.87 روپے ہے۔ ادھر ڈیزل کی قیمتوں میں بھی15 پیسے کا اضافہ ہوا ہے۔

ڈیزل کی قیمت ممبئی میں77.47 روپے فی لیٹر ہے جبکہ دہلی میں72.97 روپے فی لیٹر ہے۔واضح رہے کے بیچ اگست سے پٹرول کی قیمتوں میں 3.79 روپے فی لیٹر اور ڈیزل کی قیمتوں میں4.21 روپے فی لیٹر اضافہ ہو چکا ہے اور عالمی منڈی کے حالات کو دیکھا جائے تو اضافے کا یہ سلسلہ ابھی جاری رہے گا۔

ادھر پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی قیمتوں کے خلاف کانگریس اور حزب اختلاف کی دیگر سیاسی پارٹیاں حکومت کے خلاف سڑکوں پر اتری ہوئی ہیں اور یہ حکومت کے لئے اس لئے بھی پریشانی کا سبب ہے کیونکہ چند ماہ بعد بی جے پی کی قیادت والی کئی اہم ریاستوں میں انتخابات ہونے ہیں اور ان کے چند ماہ بعد عام انتخابات ہونے ہیں۔

حکومت کے پاس قیمتیں کم کرنے کا واحد حل یہ ہے کہ وہ ایکسائز ڈیوٹی کم کر دے مگر حکومت کے رویہ سے نہیں لگتا کہ وہ ایسا کچھ کرے گی۔عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے اور دوسری جانب ڈالر کے مقابلہ روپے کی قیمت مستقل گر رہی ہے جس کی وجہ سے ابھی قیمتیں اور بڑھیں گی۔ روپے کی قیمت جس تیزی کے ساتھ نیچے گر رہی ہے اس سے ہندوستانی صنعت کو زبردست نقصان ہو رہا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!