Published From Aurangabad & Buldhana

ممتاز فکشن نگار نورالحسنین کے افسانوں کا ہندی میں ترجمہ

شہر اورنگ آباد کی مشہور و معروف شخصیت جس نے اپنی جہد مسلسل و فکشن کے انوکھے طرز ادا سے اپنی الگ پہچان بنائ۔ جنھوں نے شہر اورنگ آباد کی سر زمین پر نثر کی تاریخ کو پختہ تر کیا۔ جن کی تحریروں کو بنگلہ دیش کے تعلیمی اداروں نے قبول کر اپنے نصاب کی زینت بنایا۔ جن کی تحریروں کو پاکستان نے نہ صرف سراہا بلکہ وہاں کے پبلیشرز نے آپ کی تخلیقات کوشائع کیا ہے اور جنہیں عالمی منظر نامے پر دور حاضر کا بہترین فکشن نگار جانا جاتا ہے۔ جن کا کردار اور اخلاق علاقے بھر میں مثالی بن چکا ہے۔ ایک ایسا مصنف جو اپنی تحریروں سے قلوب کو سر کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔اب اس مصنف کی تحریروں کے کمال فن نے نہ صرف اردو والوں کو بلکہ دیگر زبانوں کے ادبا کو بھی اپنی جانب متوجہ کرلیا ہے۔ یہاں بات تخلیقی ادب کے ستارے نورالحسنین کو ہو رہی ہے۔جن کے فن کا کمال یہ ہے کہ صرف اردو ادب ہی میں نہیں بلکہ دیگر زبانوں کے ماہرین کے پاس بھی آپ کے فن کو مقبولیت حاصل ہو چکی ہے۔ اس کی مثال حال ہی میں ہندی کے بڑے ساہتکار انور بھدراکی کی ترجمہ کردہ کتاب جس کا عنوان”نورالحسنین کے افسانوں کا انوواد سنگرہ-حصہ اول”ہے۔واضح ہو کہ یہ وہی انور بھدراکی ہیں جن کی تحریروں کے باعث انھیں کئی اعزازات سے نوازا جا چکا ہے انھوں نے مصنف کے افسانوں سے متاثر ہوکر ان کا ہندی میں ترجمہ کیا ہے جس کی بڑے پیمانے پر اشاعت ہونے جا رہی ہے۔ انور بھدراکی اپنی فکر اور اپنے منفرد اسلوب کے لیے ہندی ادب میں جانے جاتے ہیں۔ان کی نظروں سے نورالحسنین صاحب کی تحریریں گزریں جس کے بعد انھوں نے اسے ہندی ساہتیہ میں شامل کرنے اور ہندی اور اردو کے آپسی تعلق کو استوار کرنے کی خاطر حسنین صاحب کے افسانوں کو ہندی ترجمے کے ساتھ ترتیب دیا ہے تاکہ ہندی کا قاری بھی مصنف کے فن سے محفوظ ہوسکے۔اس کے علاوہ آپ پر ڈاکٹر قمر النساء کی مرتب کردہ کتاب ’’ نورالحسنین کے افسانوں کا تجزیاتی مطالعہ ‘‘ بھی حال ہی میں منظر عام پر آ چکی ہے۔ علاقہ اورنگ آباد کی تمام ادبی تنظیمیں اور خصوصاً حلقہ عالمگیر ادب نورالحسنین صاحب اور انور بھدراکی کو اس کتاب کی اشاعت پر مبارکباد پیش کرتا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!