Published From Aurangabad & Buldhana

مزیدتین بھگوادہشت گرد گرفتار‘پستول وچارزندہ کارتوس برآمد

اورنگ آبادمیں اے ٹی ایس و سی بی آئی کی مشترکہ کاروائی سچن اندورے کاچچازاد بھائی اوردوست گرفتار ملزمین میں شامل

اورنگ آباد:۲۱؍اگست( اسٹاف رپورٹر)ڈاکٹر نریندر دابھولکر قتل معاملہ میں سی بی آئی اوراے ٹی ایس نے آج مشترکہ کاروائی کرتے ہوئے سچن اندورے کے رشتہ دار چچازادبھائی اوردوستوں کے مکانات پر چھاپہ مارکرایک مکان سے پستول اورچارزندہ کارتوس برآمدکیے اورتین ہندودہشت گردوں کو گرفتارکیا۔سی بی آئی اوراے ٹی ایس نے یہ کاروائی مشترکہ طورپر انجام دی جو سچن اندورے کی معلومات پر انجام دی گئی۔

اندورے کی گرفتاری کے بعد ڈاکٹر نریندردابھولکر ‘گوری لنکیش‘ گووند پانسرے‘ کلبرگی قتل معاملات میں پرتیں کھلتی جارہی ہیں۔اطلاعات کے مطابق سچن اندورے نے جس پستول سے ڈاکٹر دابھولکر کاقتل کیاتھااس کی تصدیق کیلئے سی بی آئی اس پستول وکارتوس کو لیباریٹری میں روانہ کریگی۔باوثوق ذرائع کے مطابق اورنگ آبادسے جن تین دہشت گردوں کوحراست میں لیاگیاہے کہ اس میں روہت ریگے‘ نچیکیت انگڑے‘ اوراجنکیہ سڑڈے شامل ہیں۔ان تینوں کو مختلف مقامات سے حراست میں لیاگیاہے۔ لیکن اے ٹی ایس کے اسکواڈ کودیولائی کے منجیت پرائڈ کی عمارت میں رہائش پذیر نچیکیت انگڑے سے پستول اورچارزندہ کارتوس اور کئی اہم دستاویزات ملے۔ سی بی آئی اوراے ٹی ایس نے اس بات کی کوئی تصدیق نہیں ہے۔انگڑے گزشتہ تین سال سے اورنگ آبادمیں رہائش پذیرتھا اوراس پر تفتیشی ایجنسیوں کی نظریں تھیں۔ ساکنان نے بتایاکہ کل رات نوبجے اے ٹی ایس کی ایک ٹیم منجیت پرائڈ بلڈنگ کے اے ون ۲۰۴؍فلیٹ کے اطراف گشت کرتی دکھائی دی ۔یہ کاروائی صبح تک جاری رہی۔ سچن اندورے نے سی بی آئی کوکافی اہم معلومات فراہم کی ہے۔ سچن اندورے گزشتہ دنوں اورنگ آبادسے حراست میں لیے گئے شرد کڑسکرکا دوست تھا۔اس کی معلومات پرسچن کوگرفتارکیاگیاتھا۔ادھرممبئی میں سی بی آئی اوراے ٹی ایس نے معلومات کی بناء پرسناتن سنستھاکے صدرڈاکٹر جینت اٹھولے کو پوچھ تاچھ کیلئے حراست میں لیاجائیگا۔ اٹھولے سناتن سنستھاکا صدرہے۔


ویبھوراؤت کی گرفتاری اوراسکی معلومات سے یہ بات واضح ہوچکی ہے کہ سناتن سنستھا ہی ڈاکٹر نریندردابھولکر قتل میں ملوث ہے۔ویبھوراؤت کو نالاسوپارہ کے فلیٹ پرچھاپہ مارکر گرفتارکیاگیاتھا۔جہاں پر بیس زندہ بم اور دیگر آتشیں مادہ برآمدکیاگیاتھا۔کل رات دیرگئے اورعلی الصبح ایک مرتبہ پھر ویبھوراؤت کے مکان کی اے ٹی ایس وسی بی آئی نے تلاشی لی ۔جبکہ اورنگ آبادمیں بھی تین مکانات پر چھاپہ ماراگیااورسچن اندورے کے دوست ورشتہ داروں کوگرفتار کیاگیا۔یہ دونوں کاروائیاں ایک ساتھ انجام دی گئیں ۔ان چھاپوں کوخفیہ رکھاگیاتھا۔اے ٹی ایس اور سی بی آئی کو خدشہ ہے کہ یہ تمام تیارشدہ بموں کااستعمال ریاست میں تہواروں کے موقع پر دہشت گردانہ واقعات میں کرنے والے تھے۔ فرقہ وارانہ فسادات بھڑکانے کیلئے یہ کاروائیاں انجام دی جانی تھیں۔ شردکڑسکرسے موصولہ اطلاعات کے مطابق اس نے اقبال جرم کیاہے کہ اس نے پونہ میں دابھولکر قتل معاملہ میں شوٹرس کی مددکی تھی اوروہ بائیک چلارہاتھا۔اس نے سچن اندورے کا بھی نام بتایاتھاجس نے دابھولکر پرفائرنگ کی تھی۔ سی بی آئی نے اندورے کو ۱۸؍اگست کو اورنگ آبادسے حراست میں لیاتھا۔

بم کوکہاجاتاتھالڈو‘گوامیں لی تھی ٹریننگ
سچن اندورے‘شردکڑسکر اورویبھوراؤت کی گرفتار ی سے سی بی آئی اوراے ٹی ایس کو نت نئی معلومات مل رہی ہے ۔یہ ہندودہشت گردبم کو کوڈ ورڈ میں لڈوکہتے تھے۔ وہ اپنے گروپ ممبران سے خفیہ زبان میں بات چیت کرتے تھے۔ان تمام نے ہتھیارچلانے کی ٹریننگ گوا میں حاصل کی تھی۔جہاں ان کارابطہ دہشت گردوریندرتاؤڑے سے ہواتھاجسے سی بی آئی نریندر دابھولکر قتل معاملہ میں پہلے ہی حراست میں لے چکی ہے۔واضح رہے کہ اے ٹی ایس نے ۲۰۱۱ء اور۲۰۱۵ء میں حکومت کوایک خفیہ رپورٹ پیش کی تھی جس میں سناتن کی تخریبی کاروائیوں کے پیش نظراس پر پابندی کا مشورہ دیاتھا۔ لیکن کانگریس این سی پی اوربی جے پی شیوسینانے اس ہندودہشت گردتنظیم پرپابندی عائدکرنے سے انکارکردیاتھا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!