Published From Aurangabad & Buldhana

مرکزی حکومت نے ’’وزیر اعظم ریسرچ فیلوشپ‘‘ کے لئے مختص کئے1650کروڑ روپئے

اسکیم کے تحت طلباء کو پہلے دو سالوں کے لئے 70,000 روپئے ،پھر تیسرے سال کے لئے 75,000روپئے اوراگلے دو سالوں کے لئے 80,000روپئے ماہانہ وظیفہ ملے گا

نئی دہلی:۔مرکزی حکومت کی کیبینٹ نے وزیر اعظم ریسرچ فیلو شپ اسکیم کو سات سال کے عرصہ کے لئے پاس کردیا ہے جس کی شروعات 2018-19سے کردی جائیگی۔ یہ اسکیم کا اعلان بدھ کے روز مرکزی بجٹ میں کردیا گیا تھاجس کے لئے کل 1659کروڑ روپئے رکھے گئے ہیں۔
اس اسکیم کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی نے تخلیق اور ٹیکنالوجی پر زور دینے کی بات کی ہے جو کے ملک کی ترقی کے لئے ناگزیر ہیں۔ اس اسکیم کے تحت B.Tech, M.TechیاM.Sc. میں انڈین انسٹی ٹیوٹ آف سائنس، انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی وغیرہ جیسے اداروں سے کررہے ہونگے اور اپنے آخری سال میں ہونگے ساتھ ہی ان کی کارکردگی سب میں نمایاں ہوگی ان طلباء کو PhDکے لئے ان اداروں میں سیدھے داخلہ مل جائیگا اور وہ اس اسکیم کے اہل ہونگے۔ ساتھ ہی اس اسکیم کو پانے والوں کو ITIکالجس میں کم از کم ہفتہ میں ایک مرتبہ پڑھانا ہوگا۔
اس اسکیم کے اعلان پر IITکانپور کے پروفیسر دھیرج سنگھی نے کہا کہ ’’ یہ ایک اچھی کوشش ہے لیکن اگر اس کے تحت آپ علم کو منتقل کرنا چاہتے ہیں تو ان طلباء کو انجینیرنگ و سائنس کالجس کے طلباء کو پڑھانا لازم کرنا چاہیے نہ کہ ITIکالجس میں۔‘‘
واضح رہے کہ جو طلباء اس اسکیم کے مطابق اپنی قابلیت پیش کرنے میں کامیاب ہونگے ان کو چھانٹ کر انٹرویو سے بھی گزرنا ہوگا۔ اس اسکیم کو حاصل کرپانے والے طلباء کو ماہانہ وظیفہ دیا جائیگا جس میں پہلے دو سالوں کے لئے 70,000 روپئے ،پھر تیسرے سال کے لئے 75,000روپئے اورچوتھے اور پانچویں سال کے لئے 80,000روپئے ملیں گے۔اس کے علاوہ اس طالب علم کو اپنے ریسرچ پیپر کو پیش کرنے کے لئے اگر کہیں ملک کے باہر یا عالمی کانفرنسس میں جانے کے لئے 2لاکھ تک کا سفر خرچ بھی دیا جائیگا۔ اس اسکیم کے تحت تین سال میں 3000طلباء کو چنا جائیگا جس کی شروعات 2018-19میں ہوگی۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!