Published From Aurangabad & Buldhana

لاپتہ طیارہ معاملہ: ’اے این-32‘ کا سراغ لگنے کے بعد فضائیہ کی بچاؤ مہم عروج پر

نئی دہلی: اروناچل پردیش میں نو دن پہلے فضائیہ کے لاپتہ ہوئے ٹرانسپورٹ طیارے اے این-32 کے ملبے کا پتہ لگانے کےبعد اب پوری طاقت کے ساتھ بچاؤ مہم چلائی جا رہی ہے۔
حادثے کا پتہ چلنے کے بعد فضائیہ کے 4 گروڑ کمانڈو سمیت فوج اور مقامی کوہ پیما کی ایک ٹیم کو ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر اور فوج کے دھروو ہیلی کاپٹر کی مدد سے اس کے نزدیک اتارا گیا ہے۔ بچاؤ ٹیم نے وہاں ایک چھوٹا سا کیمپ بنایا ہے۔ یہ حادثہ سمندر کے ساحل سے 12 ہزار فٹ کی اونچائی پر ہے۔ وہاں ہیلی کاپٹر کو اتارنا مشکل ہے۔ اس لئے فضائیہ نے بچاؤ ٹیم کے لوگوں کو ہیلی کاپٹروں سے اتارنے کا فیصلہ کیا۔
گھنے جنگل اور ناقابل رسائی علاقے کے پیش نظر بچاؤ ٹیم کو ملبے تک پہنچے میں کچھ وقت لگے گا۔ بچاؤ ٹیم کی ترجیح طیارے میں سوار لوگوں کو تلاشنے کی ہے۔ فضائیہ نے بتایا، ’’اب طیارے میں سوار لوگوں کے بارے میں معلومات حاصل کر کے یہ پتہ لگایا جارہا ہے کہ ان میں کوئی زندہ بچا بھی ہے یا نہیں۔‘‘
اس دوران پہلے سے ہی جائے حادثے کے لئے روانہ زمینی دستے بھی اپنی مہم میں آگے بڑھ رہا ہے۔ آٹھ دن کے تلاشی مہم کے بعد حادثے کے شکار کا ملبا منگل کو اروناچل پردیش کے مغربی سیانگ ضلع کے لپو گاؤں سے 16کلومیٹر دور ملا تھا۔ طیارے نے گزشتہ 3 جون کو آسام کے جورہاٹ سے اروناچل پردیش کے مغربی سیانگ ضلع میں واقع میچوکا ایڈوانس لینڈنگ گراؤنڈ کے لئے پرواز بھری تھی۔ طیارے میں چھ افسر اور فضائیہ کے دیگر سات جوان سوار تھے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!