Published From Aurangabad & Buldhana

عمران خان نے صدر اور چیف جسٹس کے فرسٹ کلاس ہوائی سفر پر لگائی پابندی

کابینہ کی ہوئی دوسری میٹنگ میں کئی اہم فیصلے لیے گئے جس میں یہ فیصلہ بھی لیا گیا کہ وزیر اعظم صرف گھریلو دوروں کے لیے سرکاری طیارہ کا استعمال کریں گے۔

پاکستان کے نئے وزیر اعظم عمران خان نے جہاں ایک طرف خود سادگی کے ساتھ حکمرانی کرنے اور فضول خرچی سے بچنے کا عوام سے وعدہ کیا ہے وہیں ان کی قیادت والی نو منتخب حکومت نے صدر، چیف جسٹس، سینیٹ چیئرمین اور نیشنل اسمبلی کے اسپیکر کے فرسٹ کلاس ہوائی سفر پر پابندی عائد کر دی ہے۔ مرکزی کابینہ نے اس سلسلے میں حکم نامہ بھی جاری کر دیا ہے۔ تازہ فیصلہ عمران کابینہ کی دوسری میٹنگ میں لیا گیا۔

عمران خان کی قیادت میں کابینہ کی ہوئی دوسری میٹنگ میں کئی دیگر اہم فیصلے بھی لیے گئے۔ اس میں یہ بھی فیصلہ لیا گیا کہ وزیر اعظم صرف گھریلو دوروں کے لیے سرکاری طیارہ کا استعمال کریں گے۔ پنجاب و خیبر پختونوا میں گزشتہ حکومت میں کیے گئے سبھی بڑے ٹرانسپورٹ پروجیکٹ کے آڈٹ کا بھی فیصلہ اس میٹنگ میں ہوا۔ اس کے علاوہ اتوار کو سرکاری چھٹی رکھنے اور ہفتہ کے روز دوسری چھوٹی کو رَد کرنے کی تجویز کو خارج کر دیا گیا۔ سرکاری دفتروں میں کام کے اوقات میں کوئی تبدیلی نہ کرنے کا بھی فیصلہ اس میٹنگ میں لیا گیا۔ اتنا ضرور کیا گیا ہے کہ اب سرکاری دفاتر 8 سے 4 بجے کی جگہ 9 سے 5 بجے کر دیئے گئے ہیں۔

ایک دیگر انتہائی اہم فیصلہ میں ملک بھر میں موجود غیر مستحکم گھروں کو اَپ گریڈ کرنے کے لیے ٹاسک فورس بنانے اور بڑے شہروں میں شجرکاری کی مہم شروع کرنے کو منظوری دی گئی۔ میٹنگ میں راجدھانی انتظامیہ اور ترقیاتی محکمہ کی وزارت کو ختم کرنے اور اس کے محکموں کو دیگر وزارتوں میں ضم کرنے کا فیصلہ لیا گیا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!