Published From Aurangabad & Buldhana

سپریم کورٹ نے بے ہودہ مواد کے معاملے میں فیس بک، گوگل اور واٹس ایپ پر 1لاکھ کا جرمانہ لگایا

نئی دہلی:۔ سوشل میڈیا پر جنسی و بے ہودہ مواد پو روک لگانے کے لئے ہندوستان کی سپریم کورٹ نے سوشل میڈیا کے بڑے بڑے کھلاڑی جیسے یاہو، فیس بک ائیرلینڈ، فیس بک انڈیا، گوگل انڈیا، گوگل انکارپوریشن، مائیکروسافٹ اور واٹس ایپ پر 1لاکھ کا جرمانہ لگایا ہے۔
واضح ہو کہ جنسی و بے ہودہ مواد کو لیکر ان کمپنیوں نے عدالت عظمیٰ کی ہدایت کو نظر انداز کیا تھا۔ دکن کرونیکل نامی اخبار کے مطابق سپریم کورٹ کی بینچ جسکا حصہ جسٹس مدن بی لوہکراور یو یو للت تھے نے کہا کہ ’’ ان کمپنیوں میں سے کسی نے بھی جنسی و بے ہودہ مواد کو کنٹرول کرنے کے لئے دی گئی ہدایات پر عملکی تفصیلات نہیں جمع کی تھی جو کہ 16؍ اپریل کو دی گئی تھیں۔اس لئے ان تمام کمپنیوں کواپنے اپنے حلف ناموں کے ساتھ 1لاکھ روپئے جرمانہ جمع کروانا ہونگے۔عدالت نے جواب جمع کروانے کی آخری تاریخ کو بڑھا کر 15؍ جون کردیا ہے۔
فائنین شیل ایکسپریس نامی اخبار کے مطابق ایک غیر سرکاری تنظیم پرج والا نے 2015میں چیف جسٹس کو ایک شکایت بھیجی تھی جس میں سوشل میڈیا پلیٹ فارمس پر جنسی و بے ہودہ مواد کے چلائے جانے کو روکنے کی درخواست کی تھی۔ اس شکایت کی نوٹس لیتے ہوئے اس وقت کے چیف جسٹس ایچ ایل دتو نے CBIکو جانچ کرنے کا حکم دیا تھا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!