Published From Aurangabad & Buldhana

سوشل میڈیاپر خبریں وائرل‘ نوجوان احتیاط کامظاہرہ کریں

یوپی کے مذہبی مقامات سے لاؤڈاسپیکر ہٹائیں جائیں‘الہ آبادہائیکورٹ

اورنگ آباد: ۱۱؍جنوری:گزشتہ کچھ یوم قبل اترپردیش کی بی جے پی حکومت نے الہ آبادہائی کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمدکرتے ہوئے ریاست کے تمام مذہبی مقامات سے لاؤڈاسپیکرس ہٹانے کیلئے ذمہ داران کو نوٹس ارسال کرنی شروع کی ہیں۔جس کے سبب تمام مذہبی مقامات کے ذمہ داران میں کھلبلی مچی ہوئی ہے ۔اس ضمن میں جمعےۃ علماء ہند کے روح رواں حضرت مولانا سیدارشدمدنی نے واضح ہدایات جاری کرتے ہوئے کہاہے کہ مساجد کے ذمہ داران نمونہ فارم حاصل کرکے لاؤڈاسپیکرکی اجازت انتظامیہ وپولس محکمہ سے حاصل کریں۔ واضح رہے کہ مذکورہ احکامات ریاست اترپردیش کی حد تک ہیں۔ لیکن ریاست مہاراشٹر بالخصوص شہراورنگ آبادمیں بھی چند سوشل میڈیا سے منسلک نوجوانان مذکورہ نمونہ فارم ودیگر معلومات واٹس ایپ‘ فیس بک‘ ودیگر سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس پر بغیرکسی تحقیق کے فارورڈ کررہے ہیں۔ جس کے سبب ائمہ مساجد و دینی ذمہ داران میں بے چینی کا ماحول پایاجارہاہے۔ ادارہ ایشیاایکسپریس تمام نوجوانوں سے اپیل کرتاہے کہ وہ ایسے بلاتحقیق پوسٹ فارورڈ کرنے سے حتی الامکان پرہیز کریں۔ اس ضمن میں جمعےۃ علماء ہند مہاراشٹرکے صدر مولانا حافظ ندیم صدیقی نے بھی وضاحتی آڈیو کلپ جاری کی ہے جس میں کہاگیاہے کہ مذکورہ احکامات الہ آبادہائیکورٹ کے ہیں جس پر یوگی حکومت عمل درآمدکررہی ہے ۔مہاراشٹرمیں اس حکم پرکسی بھی قسم کا عمل نہیں کیاجارہاہے۔اس سلسلہ میں خاموشی ہی مناسب معلوم ہوتی ہے ۔کچھ جذباتی سوشل میڈیا یوزرس اسے اسلام ومسلمانوں وشعائر اسلام پرحملہ قراردے رہے ہیں۔ اس ضمن میں یوپی کے ذمہ داران بہتر پیروی کررہے ہیں۔ لہذا شہر وریاست کے سوشل میڈیا سے منسلک نوجوان احتیاط کامظاہرہ کریں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!