Published From Aurangabad & Buldhana

سری نگر ہوٹل معاملہ میں میجر گوگوئی مجرم قرار، عدالت نے دیا کاروائی کا حکم

جموں و کشمیر کے دارالحکومت سری نگر میں ایک مقامی لڑکی کے ساتھ دیکھے جانے کے معاملے میں میجر لیتل گوگوئی کی پریشانی بڑھ سکتی ہے۔

جموں و کشمیر کے دارالحکومت سری نگر میں ایک مقامی لڑکی کے ساتھ دیکھے جانے کے معاملے میں میجر لیتل گوگوئی کی پریشانی بڑھ سکتی ہے۔ اس سال مئی میں ہوئے اس واقعے کو لے کر فوج کی کورٹ آف انکوائری نے میجر گوگوئی کو مجرم قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف تادیبی کارروائی کا حکم دیا ہے۔
ذرائع کے مطابق، کورٹ آف انکوائری میں پایا گیا کہ میجر گوگوئی نےتنازعہ والے علاقے میں ایک مقامی خاتون سے قربت بڑھا کر فوجی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے اور انہوں نے ڈیوٹی کی جگہ سے دور رہ کر معیاری آپریٹنگ طریقہ کار کی خلاف ورزی کی ہے۔

گوگوئی کو پولیس نے 23 مئی کو سرینگر واقع اس ہوٹل میں تکرار ہو جانے کے بعد حراست میں لیا تھا جہاں وہ مبینہ طور پر 18 سالہ خاتون کے ساتھ گھسنے کی کوشش کررہے تھے۔ اس واقعہ کے چند دنوں بعد فوج نے اس واقعے کے سلسلے میں کورٹ آف انکوائری کا حکم دے دیا تھا۔
بتا دیں کہ میجر گوگوئی پتھربازوں سے بچاو کے لئے ایک آدمی کو جیپ سے باندھنے کے لئے سرخیوں میں آئے تھے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!