Published From Aurangabad & Buldhana

ریا چکرورتی کی درخواستِ ضمانت عدالت سے مسترد، اب وہ کیا کر سکتی ہیں؟

ممبئی: انسداد منشیات بیورو کی ایک خصوصی عدالت نے سوشانت سنگھ راجپوت کی موت کے معاملے میں منشیات کے زاویے سے تحقیقات کے بعد گرفتار بالی ووڈ اداکارہ اور سوشانت سنگھ کی گرل فرینڈ ریا چکرورتی درخواست ضمانت مسترد کر دی۔ لہذا ریا کو فی الحال جیل میں ہی رہنا ہوگا۔

ریا کے علاوہ ان کے بھائی شووک چکرورتی سمیت دیگر تمام ملزمان کی بھی درخواستیں عدالت نے یہ کہہ کر خارج کر دیں کہ کیس میں جو الزامات عائد کئے گئے ہیں وہ سنجیدہ نوعیت کے ہیں لہذا ضمانت منظور نہیں کی جا سکتی۔ عدالت نے ریا چکرورتی، شووک چکرورتی، سیموئل مرانڈا، دیپیش، باسط اور زید کی ضمانت کی درخواستیں مسترد کی ہیں۔

درخواست ضمانت ریا کے وکیل ستیش مانشندے نے دائر کی تھی، جس پر دو دنوں تک سماعت ہوئی۔ این سی بی نے ریا اور ان کے بھائی کی ضمانت کی مخالفت کی پر ریا اور اس کے بھائی شووک کی ضمانت کی درخواست سیشن عدالت میں دائر کی تھی۔ جو دو دن سے سنا ہے۔ این سی بی کی طرف سے عدالت میں کہا گیا کہ یہ دونوں ثبوتوں کے ساتھ چھیڑ خانی کر سکتے ہیں۔ تاہم، ستیش مانشندے نے دعوی کیا کہ این سی بی نے ریا پر بیان دینے کے لئے دباؤ ڈالا۔ انہوں نے ریا کی ذہنی حالت بھی خراب ہونے کا امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ریا کے پاس منشیات برآمد نہیں کی گئی ہے۔

ریا چکورتی کو منگل کے روز گرفتار کرنے کے بعد انہیں مجسٹریٹ عدالت میں پیش کیا گیا تھا، جہاں ان کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی گئی تھی اور 22 ستمبر تک جیل بھیج دیا گیا تھا۔ اس کے بعد ریا کے وکیل ستیش مانشندے نے ممبئی کی سیشن عدالت میں ان کی ضمانت کی درخواست دائر کی تھی، جسے خارج کر دیا گیا۔

اب کیا کریں گی ریا؟
ریا چکرورتی کے پاس اب بمبئی ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کرنے کا اختیار ہے۔ تاہم، جب تک درخواست ضمانت پیش کرنے کے بعد اس پر سماعت نہیں ہو جاری انہیں بھائیکھلا جیل میں ہی رہنا ہوگا۔ ریا کو این ڈی پی ایس ایکٹ کی دفعہ 16/20 کے تحت گرفتار کیا گیا ہے۔ اس سے قبل این ڈی پی ایس عدالت نے ریا کو 22 ستمبر تک این سی بی کی تحویل میں دیا تھا۔ فیصلہ دیر رات کی آنے کی وجہ سے ریا کو پوری رات این سی بی آفس میں بنائے گئے لاک اپ میں گزارنی پڑی تھا اور اگلے ہی دن یعنی 9 ستمبر کو انہیں ممبئی کی بھائیکھلا جیل منتقل کر دیا گیا۔ وہ گذشتہ دو دن سے یہاں قیدی بن کر رہ رہی ہیں۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!