Published From Aurangabad & Buldhana

دستور کے تحفظ کیلئے ہمیں آزادی کی لڑائی کی طرح مقابلہ کرنا ہوگا: اشوک چوہان

میں چورہوں تومجھے پابند سلاسل کیوں نہیں کرتے: کھڑسے جلگاؤں میں کانگریس کے اجلاس میں کھلسے کی موجود گی نے دیئے کئی واضح اشارے

جلگاؤں( شیخ کامل) کانگریس پارٹی جس نے آزادی وطن کیلئے انگریزوں سے دو دو ہاتھ کئے تھے اور جنگ آزادی کی کمان سنبھالی تھی۔ اب بد قسمتی سے آزاد ملک میں ایسا وقت آگیا ہے کہ پارٹی کو ملک کادستور بچانے اور اسکے تحفظ کیلئے اسی طرز کی مقابلہ آرائی کیلئے تمام کانگریسی کارکنان کوتیار ہونا پڑے گا۔ اس طرح کے خیالات کا اظہار جلگاؤں میں منعقد کانگریس کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ریاست مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ رکن پارلیمان وکانگریس پارٹی کے ریاستی صدر اشوک چوہان نے کیا۔کانگریس پارٹی کا یہ ضلع سطح کا اجلاس شہر کے گوداوری انجینئرنگ کالج کے میدان پر منعقد ہوا۔ اشوک چوہان نے اپنے خطاب کو جا ری رکھتے ہوئے مزید فرمایا کہ بھاجپا کے زیر اقتدار حکومت کو پچھلے ساڑھے تین سال کا عرصہ گذر چکا ہے۔ لیکن یہ عرصہ صرف سبز باغ دکھاتے اعلانات اور جھوٹے اور مکرو فریب لیئے وعدے وعیدوں کی بارشوں میں گذر گیا جبکہ عملی میدان میں کارکر دگی انتہائی مایوس کن رہی ہے۔ریاست کا کسان پہیم خود کشی پر آمادہ ہے۔ بیروزگار وتعلیم یا فتہ بیروزگار طبقہ درد کی ٹھوکریں کھاتے ہوئے روزی روٹی کیلئے سرگرداں ہے۔ ریاست میں کیڑ ے مکوڑوں کی مصداق لوگ مر رہے ہیں۔ لیکن اس سرکار کو اس افتاد بھر ی صورت حال سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ چوٹ کھائے زخم خورد ہ عوام بحرحال اب اس سرکار سے اس قدر اوب گئے ہیں کہ وہ آئندہ چناؤ میں اس سرکار کو دھول چٹانے سے بالکل دریغ نہیں کریں گے۔ کانگریس پارٹی کے اس ضلعی اجلاس کو اس مرتبہ ایک خصوصی اہمیت حاصل ہوگئی اور وہ اس صورت میں کہ اس اجلاس کے پروگرام میں بھاجپا کے علاقہ خاندیش کے کلیدی رہنما اور عوامی لیڈر جن کی ان دنوں اپنی پارٹی بھاجپا سے پچھلے ایک عرصے سے ان بن جا ری ہے۔ ایکناتھ کھلسے کو جب سے اپنے عہدہ وزارت سے ہٹنا پڑا۔ اسی کے بعد سے پارٹی میں انہیں مسلسل حاشیے پر ڈالنے کا عمل جاری ہے۔اور اب اس تضحیک آمیز روش سے کھلسے دلبرداشتہ ہو چکے ہیں۔ اور شائد اسی لئے کھلسے کانگریس پارٹی کے اس اجلاس میں پہنچ گئے اس کے بعد انہوں نے اپنی ہی پارٹی اورپارٹی کے ارباب مجاز پر تیکھے وار کئے نیز کہا کہ مجھ پر الزام تراشیاں ہی کب تک جاری رکھو گے۔ میں مجرم ہوں چورہوں تو مجھے جیل میں کیوں نہیں بند کردیتے۔بہر حال کھلسے کے کانگریس کے اجلاس میں پہنچنے پر ان کی کانگریس میں شمولیت کی اٹکلیں تیز ہوکر علاقہ بھر کا سیا سی ماحول اچھا خاصہ تپنے لگا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!