Published From Aurangabad & Buldhana

خبردار! ہندوستان پر اقتصادی مندی کا اثر زیادہ واضح ہوگا: آئی ایم ایف

بین الاقوامی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) نے کہا ہے کہ ممالک کے درمیان جاری کاروباری جنگ (ٹریڈ وار) یا جھگڑے عالمی معیشت کو کمزور کر رہے ہیں۔ آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کے طور پر اپنے پہلے خطاب میں کرسٹلینا جارجیوا نے کہا ہے کہ عالمی معیشت کی شرح ترقی اس دہائی کی سب سے نچلی سطح پر آنے کے امکانات ہیں۔ انہوں نے ہندوستان کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں مندی کے زیادہ واضح اثرات ہوں گے۔

جارجیوا نے کہا ’’ابھرتے بازار والے کچھ ممالک جیسے ہندوستان اور برازیل میں اس سال مندی زیادہ واضح ہوگی۔ چین کی شرح ترقی کئی سالوں تک لگاتار بڑھنے کے بعد اب گھٹتی جا رہی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کے تحقیق بتاتی ہے کہ تجارتی جھگڑوں کا وسیع اثر نظر آ رہا ہے اور ممالک کو معیشت میں نقدی ڈالنے کےلئے تیار رہنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی بھی عالمی معیشت کے لئے ایک بڑا چیلنج ہے اور اس کے حل کے لئے کاربن ٹیکس بڑھایا جانا چاہیے۔

جارجیوا نے کہا کہ ’’امکان ہے کہ دنیا کی نوے فیصدی معیشت مندی کی چپیٹ میں آ جائے گی۔ انہوں نے کہا ’’امریکہ اور جرمنی میں بے رزگاری کی شرح کم ہے لیکن پھر بھی امریکہ، جاپان اور یوروپی خطہ میں اقتصادی حرکت کم ہے اور دنیا کی ابھرتی ہوئی معیشتیں جیسے ہندوستان اور برازیل ہیں وہاں پر یہ مندی زیادہ واضح ہو گی‘‘۔

وزارت خزانہ کو آئی ایم ایف کے اس اشارہ کو سنجیدگی سے لینے کی ضرورت ہے کیونکہ ملک کی معیشت پہلے ہی کئی مسائل سے دو چار ہے اور نوٹ بندی کے بعد سے گھریلو صنعت بری طرح متاثر ہو چکی ہے جبکہ جی ایس ٹی کا اثر ابھی تک انڈسٹری پر نظر آ رہا ہے۔

قومی آوازبیورو

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!