Published From Aurangabad & Buldhana

حیدرآباد آبروریزی واقعے پر پی ایم نریندر مودی کی خاموشی حیران کرنے والی:کانگریس

نئی دہلی: کانگریس نے حیدرآباد میں ایک ویٹنری ڈاکٹر کی عصمت دری کے بعد قتل کے معاملے میں وزیر اعظم نریندر مودی کی خاموشی پر حیرانی ظاہر کی ہے اور الزام عائد کیا ہے کہ ان کی حکومت خواتین کے خلاف جرائم روکنے کے اقدامات کرنے کے لئے بنایا نربھیا فنڈ کو خرچ نہیں کر رہی ہے۔کانگریس راجیہ سبھا رکن اے ياگنك اور شمع نے پیر کو یہاں پارلیمنٹ ہاؤس میں پریس کانفرنس میں کہا کہ حیدرآباد کا واقعہ دل دہلانے والا ہے لیکن مسٹر مودی نے اس تعلق سے اب تک کچھ نہیں بولا ہے اور یہ حیران کن بات ہے۔ حیرت اس بات کی بھی ہے کہ خواتین اور بہبود اطفال کی وزیر ایک خاتون ہیں لیکن وہ بھی اس معاملے پر خاموش ہیں ۔ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن بھی ایک خاتون ہیں لیکن اس معاملے میں ان کی ہمدردی بھی نہیں جاگی اور وہ بھی خاموش ہیں۔

کانگریس رکن پارلیمنٹ نے مزید کہا کہ حکومت سرگرم ہوکر خواتین کے خلاف ہونے والے جرائم روکنے کے لئے کوئی قدم نہیں اٹھا رہی ہے ۔ حکومت کی اسی پالیسی کا نتیجہ ہے کہ خواتین کے تحفظ کے اقدامات کرنے کے لئے قائم نربھیا فنڈ کا پیسہ خرچ نہیں ہو رہا ہے اور یہ فنڈ بیکار جارہا ہے۔ خواتین کے تحفظ کے تئیں حکومت ڈھیلا رویہ اپنائے ہوئے ہے اور وہ اس کے لئے مختص فنڈ استعمال نہیں کر کے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھا رہی ہے۔

کانگریس ترجمانوں نے کہا کہ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 2017 میں ملک میں خواتین کے خلاف جرائم کے تین لاکھ 50 ہزار معاملات سامنے آئے ہیں ۔ بیٹی پڑھاؤ، بیٹی بچاؤ کی بات کرنے والی حکومت خواتین کی حفاظت کے تئیں بے حس ہے اور اس سمت میں پی ایم مودی میں کوئی منشا نظر نہیں آ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو خواتین کی حفاظت کے سلسلے میں سخت قدم اٹھانے چاہئے اور بے خوف ماحول بنانا چاہیے۔

یو این آئی

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!