Published From Aurangabad & Buldhana

حکومت مہاراشٹر نے 20.5لاکھ اسکوائر میٹرجنگلاتی زمین نجی کمپنیوں کو دے دی!!!

ممبئی: ایک جانب جہاں سب کے لئے زمین کی کمی ہورہی ہے جس میں خاص طور سے جنگلاتی زمین میں بھی کمی آرہی ہے۔ فاریسٹ ایڈوائزری کمیٹی نے چکدوہ ، مہاراشٹر کی تقریباً 87.98ہیکٹر جنگلاتی زمین نجی کمپنی کو دینے کی اجازت دے دی ہے۔ یہ زمین سولار انڈسٹریز انڈیا لمٹیڈ (SIIL) کودی گئی ہے جو ڈفینس پروڈکٹ بنانے کا کام کرتی ہے۔

ٹائمز آف انڈیا کی خبر کے مطابق 222ایکر ریزرو جنگلاتی زمین جو کہ تقریباً 293فوٹ بال اسٹیڈیم کے لئے لگنے والی زمین کے برابر ہے جو کہ ناگپور سے 40کلومیٹر دور کوندھالی اور کلمیشور کے چاکدوہ میں واقع ہے ۔اس زمین کی قیمت 100کروڑ روپئے سے بھی زیادہ ہوسکتی ہے۔ لیکن SIILنے اس زمین کے لئے حکومت کو صرف 7.09کروڑ روپئے ہی دیے ہیں۔ ساتھ ہی کمپنی 7کروڑ روپئے تک اس کو تیار کرنے اورچڑیا کے مصنوعی گھونسلے بنائے گی۔

اس زمین کو نجی کمپنی کو دینے میں ماہرین کے مشوروں کو بھی نظر انداز کیا گیا۔ اس سے متعلق تقریباً ماہرین کی تین رپورٹ حکومت مہاراشٹر کو جمع کرائی گئی تھیں۔ جس میں حکومت کو یہ زمین نہ دینے کا مشورہ دیا گیا تھا۔ جنگلاتی زمین کو اس طرح نجی کمپنیوں کو دینے کی وجہ سے بہت سے جانوروں کی زندگیاں خطرے میں پڑھ جائینگی۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!