Published From Aurangabad & Buldhana

جموں وکشمیر: ہری سنگھ ہائی اسٹریٹ علا قے کے قریب گرینیڈ حملہ, 7 افراد ہوئے زخمی

جموں وکشمیر: جموں وکشمیرمیں دہشت گردوں نےایک بار دہشت گردانہ گرینیڈ حملہ کیا ہے۔ یہ حملہ سری نگرمیں ہوا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سخت حفاظتی انتظامات کے باوجود ہری سنگھ ہائی اسٹریٹ کے پاس دہشت گردوں نےگرینیڈ پھینکا ہے۔ جس سے اس حملے میں 7 لوگ شدید طورپرزخمی ہوگئے ہیں۔ یہ گرینیڈ حملہ تب ہوا ہے، جب وادی میں سیکورٹی کے انتظامات انتہائی سخت ہیں اورہرجگہ جوانوں کوتعینات کیا گیا ہے۔

حادثہ کی اطلاع ملتے ہی موقع پر بڑی تعداد میں سیکوٹی اہلکاروں کی تعیناتی کی گئی ہے۔ جائے حادثہ پرجموں وکشمیر پولیس کے ساتھ ساتھ سیکورٹی اہلکاروں کی ٹیم موجود ہے۔ سیکورٹی اہلکارگرینیڈ حملے کے بارے میں جانچ پڑتا ل کررہے ہیں۔

اس سے قبل جموں وکشمیر حکومت نے وادی کشمیر میں تمام مواصلاتی کمپنیوں کی پوسٹ پیڈ موبائل فون خدمات 14 اکتوبرسے بحال کرنےکا اعلان کیا تھا۔ تاہم انٹرنیٹ خدمات کی معطلی جاری رہےگی۔ ریاستی حکومت کے ترجمان روہت کنسل نے ہفتہ کے روز یہاں صحافیوں کے لئے قائم کردہ میڈیا سنٹر میں ایک پُرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد تمام مواصلاتی کمپنیوں کی فون خدمات کو 14 اکتوبر سے بحال کرنے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ 5 اگست کو جس دن مرکزی حکومت نے جموں وکشمیرکو آئین ہند کی دفعہ 370 اوردفعہ 35 اے کے تحت حاصل خصوصی اختیارات منسوخ کئےاورریاست کودو مرکز کے زیرانتظام والےعلاقوں میں منقسم کیا، اس کے بعد سے ریاست بھر میں موبائل فون و انٹرنیٹ خدمات معطل کر دی گئی تھیں۔ اگرچہ جموں اور لداخ میں یہ خدمات بحال کی جا چکی ہیں تاہم وادی میں ان کی معطلی اب تک جاری رکھی گئی ہے۔ روہت کنسل نے کہا: ‘جموں وکشمیر میں صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ریاست کے باقی ماندہ علاقوں میں موبائل فون خدمات بحال کرنے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ تمام ٹیلی کام کمپنیوں کے پوسٹ پیڈ موبائل فون کنکشنز سوموار یعنی 14 اکتوبرکودوپہر12 بجےبحال کئے جائیں گے۔ یہ خدمات وادی کے سبھی 10 اضلاع میں بحال کی جائیں گی’۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!